• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

واش روم میں خفیہ کیمروں کا مقصد مانیٹرنگ تھا، اسکول انتظامیہ


کراچی کے نجی اسکول میں خواتین اساتذہ اور طالبات کے زیرِ استعمال واش رومز میں خفیہ کیمرے لگانے اور ویڈیوز بنانے کے معاملے پر اسکول انتظامیہ کا موقف سامنے آگیا۔

اسکول انتظامیہ کا کہنا ہے کہ واش روم میں خفیہ کیمروں کا مقصد مانیٹرنگ تھا۔

واضح رہے کہ کراچی کے نجی اسکول میں  محکمہ تعلیم نے چھاپہ خواتین اساتذہ کی شکایت پر مارا، خفیہ کیمرے مرد اساتذہ کے واش رومز میں بھی پائے گئے۔

حکام کا کہنا ہے کہ اسکول کی رجسٹریشن منسوخ کردی گئی ہے، مزيد کارروائی کے لیے محکمہ تعلیم کا اجلاس پیر کو طلب کیا گیا ہے۔

خفیہ کیمروں کا سلسلہ شاپنگ مالز کے چینجنگ رومز سے نکل کر اسکولوں کے واش رومز تک دراز ہوگیا، محکمہ تعلیم سندھ کا بتانا ہے کہ کراچی کے ایک نجی اسکول میں خواتین اساتذہ اور طالبات کے زیر استعمال واش رومز سے خفیہ کیمرے پکڑے گئے، جن سے ویڈیوز بنائی جاتی تھیں۔

محکمے کو اس بات کی شکایت خواتین اساتذہ نے کی جس کے بعد اسکول پر چھاپا مارا گیا، محکمہ تعلیم کی ٹیم کے مطابق چھاپے کے دوران خفیہ کیمرے مرد اساتذہ کے واش رومز میں بھی پائے گئے۔

ذرائع کا بتانا ہے کہ پوچھ گچھ کے دوران موقع پر موجود اسکول اسٹاف نے جواز پیش کیا کہ کیمرے مانیٹرنگ کیلئے لگائے گئے ہیں، تاہم اسکول کے مالک کی طرف سے باضابطہ کوئی موقف سامنے نہیں آیا۔

محکمہ تعلیم کی جانب سے اسکول کی رجسٹریشن منسوخ کردی گئی جبکہ مزيد کارروائی کے لیے اجلاس پیر کو طلب کرلیا گيا ہے۔

ایڈیشنل ڈائریکٹر ایف آئی اے کے مطابق سائبر کرائم کی ٹیم اسکول بھیجی جائے گی اور چیک کیا جائے گا کہ کیمرے کس مقصد کیلئے لگائے گئے تھے۔

قومی خبریں سے مزید