• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

تیسرے دن کا کھیل ختم، بنگلا دیش کی برتری 83 رنز

پاکستان اور بنگلا دیش کے درمیان چٹاگانگ ٹیسٹ میں تیسرے دن کے کھیل کے اختتام پر بنگلا دیش نے پاکستان کے خلاف  83 رنز کی برتری حاصل کرلی ہے اور اس کی 6 وکٹیں ابھی باقی ہیں۔

ٹیسٹ کے تیسرے دن پاکستان کی پوری ٹیم 286 رنز بنا کر آؤٹ ہوگئی، پاکستان کی جانب سے عابد علی نے سینچری اسکور کی۔

تیسرے دن جب بنگلا دیش نے اپنی دوسری اننگ کا آغاز کیا تو ٹیم ابتداء میں مشکلات کا شکار ہوئی، ٹیسٹ میں میزبان ٹیم کو دوسری اننگ میں بیٹنگ شروع کرنے سے قبل ہی 44 رنز کی برتری حاصل ہوئی تاہم اس کے اوپنرز ٹیم کو ایک بار پھر اچھا آغاز نہ فراہم کر سکے۔

میزبان ٹیم کو دوسری اننگ میں اپنی پہلی اور دوسری وکٹ کا نقصان 14 کے اسکور پر ہوا جب شادمان اسلام 1 اور نجم الحسن شانتو بغیر کوئی رن بنائے پویلین لوٹ گئے۔

ٹیم کا اسکور 15 پر پہنچا تو مومن الحق بھی صفر پر پویلین چلتے بنے، 18 رنز بنانے والے سیف حسن 25 کے مجموعی اسکور پر آؤٹ ہوئے ان کی وکٹ بھی شاہین شاہ کے حصے میں آئی ، پاکستان کی جانب سے شاہین شاہ نے 3اور حسن علی نے 1وکٹ حاصل کی ہے۔

تیسرے دن کا کھیل جب ختم ہوا تو میزبان ٹیم نے 4 وکٹ کے نقصان پر 39 رنز بنا لیے تھے اور اس کی پاکستان کے خلاف مجموعی برتری 83 رنز کی ہوچکی ہے۔

اس سے قبل پاکستان نے تیسرے روز کے کھیل کا آغاز بغیر کسی نقصان 145 رنز پر کیا، ایک رن کے اضافے کے بعد ڈیبیو کرنے والے عبدﷲ شفیق 52 رنز بنا کر آؤٹ ہوگئے اس کے بعد آنے والے کھلاڑی اظہر علی بھی کوئی رن بنائے بغیر پویلین لوٹ گئے۔

اس کے بعد کپتان بابر اعظم بیٹنگ کیلئے آئے مگر وہ بھی کچھ خاص نہ کر کرسکے اور 10 رنز بناکر بولڈ ہوگئے، ان کے بعد آنے والے فواد عالم بھی 8 رنز ہی اسکور کر سکے۔

لنچ کے وقفے کے بعد مہمان ٹیم کی پانچویں وکٹ اس وقت گری جب محمد رضوان 5 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے جبکہ 133 رنز بنانے والے عابد علی کی شاندار اننگز کا خاتمہ 217 کے اسکور پر ہوا۔

پاکستان کی جانب سے آٹھویں نمبر پر بیٹنگ کیلئے آنے والے حسن علی نے جارحانہ انداز اپنایا تو فوراً ہی 12 رنز پر اسٹمپ ہوگئے جبکہ ساجد خان5 رنز ہی بنا سکے۔

پاکستان کی نویں وکٹ نعمان علی کی تھی جو ریویو لینے کے باوجود تھرڈ امپائر کے متنازعہ فیصلے کا شکار ہوئے۔

پاکستان کی دسویں وکٹ 286 رنز پر گری، آؤٹ ہونے والے کھلاڑی فہیم اشرف تھے جنہوں نے 38 رنز بنائے جبکہ شاہین شاہ آفریدی 13 رنز پر ناٹ آؤٹ رہے۔

بنگلادیش کی جانب سے تیج الاسلام نے شاندار بولنگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے 7 کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا جبکہ عبادت حسین نے 2 وکٹیں حاصل کیں، ایک وکٹ مہدی حسن کے حصے میں آئی۔

پاکستان نے پہلے میچ کی پہلی اننگز میں دوسرے دن کے اختتام پر بغیر کسی نقصان کے 145 رنز بنائے تھے۔

خیال رہے کہ بنگلادیش کے خلاف عبدﷲ شفیق نے ڈیبیو ٹیسٹ میں نصف سنچری بنائی، انہوں نے 154 گیندوں پر 2 چھکوں اور 2 چوکوں کی مدد سے نصف سنچری بنائی۔

بنگلادیش پہلی اننگز میں 330 رنز بناکر آؤٹ ہوگئی ہے، بنگلا دیش نے میچ میں پہلے دن کے کھیل کے اختتام پر 4 وکٹ کے نقصان پر 253 رنز بنائے تھے جبکہ دوسرے روز کے کھیل میں میزبان ٹیم مزید 77 رنز بناسکی۔

بنگلا دیش کی جانب سے لٹن داس 114 اور مشفیق الرحیم 91 رنز بنا کر نمایاں کھلاڑی رہے جبکہ مہدی حسن 38 رنز بناکر ناٹ آؤٹ رہے۔

میزبان ٹیم کے آؤٹ ہونے والے کھلاڑیوں میں شادمان اسلام، سیف حسن، نجم الحسن شانتو بالترتیب 14، 14 جبکہ کپتان مومن الحق 6 رنز بنا کر پویلین لوٹ گئے، اس کے علاوہ لٹن داس 114 اور مشفیق الرحیم 91 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے اور یاسر علی 4، تائج الاسلام 11، ابوجاید 8 اور عبادت حسین صفر پر آؤٹ ہوئے۔

پاکستان کی طرف سے حسن علی نے شاندار بالنگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے بنگلا دیش کے 5 شکار کیے جبکہ شاہین شاہ آفریدی اور فہیم اشرف نے 2،2 وکٹیں حاصل کیں۔ ساجد خان کے حصے میں ایک وکٹ آئی۔

کھیلوں کی خبریں سے مزید