• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

پاکستان کا T20 کے بعد ٹیسٹ سیریز میں بھی وائٹ واش

پاکستان اور بنگلا دیش کے درمیان بارش سے متاثرہ ڈھاکا ٹیسٹ میچ کے آخری دن میزبان ٹیم کو پاکستان کے ہاتھوں اننگز اور 8 رنز سے شکست ہوگئی۔

فالو آن کے بعد بنگلا دیش کی ٹیم نے اپنی دوسری اننگز کا آغاز کیا تو وہ پہلی اننگز سے مختلف نہ تھا اور ابتداء سے ہی اس کی وکٹیں گرنے کا سلسلہ جاری رہا۔

بنگلا دیش کی دوسری اننگز

میزبان ٹیم کی دوسری اننگز میں پہلی وکٹ محمود الحسن جوائے کی تھی جو 6 رنز بنا کر حسن علی کی گیند پر بولڈ ہوئے۔

دوسرے آؤٹ ہونے والے کھلاڑی شادمان اسلام تھے وہ 2 رنز بنا سکے، انہیں شاہین شاہ نے پویلین کی راہ دکھائی۔

ٹیم کا اسکور 19 رنز پر پہنچا تو مومن الحق حسن علی کی بال پر  ایل بی ڈبلیو ہوئے، انہوں نے وکٹ بچانے کیلئے ری ویو کا سہارا بھی لیا مگر وہ بھی ضائع گیا۔

میزبان ٹیم کے 6 رنز بنانے والے نجم الحسن شانتو کو شاہین شاہ نے ایل بی ڈبلیو کیا۔

لٹن داس اور مشفق الرحیم نے ٹیم کو سہارا دیا اور 73 رنز کی شراکت قائم کی، لٹن داس 45 رنز بنا کر ساجد خان کی بال پر فواد عالم کے ہاتھوں کیچ آؤٹ ہوئے۔

ٹیم کا اسکور 147 پر پہنچا تو مشفق الرحیم 48 رنز بنا کر رن آؤٹ ہوگئے، ساتویں آؤٹ ہونے والے کھلاڑی مہدی حسن مرزا تھے انہیں بابر اعظم نے ایل بی ڈبلیو کیا۔

میزبان ٹیم کی آٹھویں وکٹ شکیب الحسن کی تھی، انہیں ساجد خان نے 63 رنز پر بولڈ کیا جبکہ نویں آؤٹ ہونے والے کھلاڑی خالد احمد کو بھی ساجد نے پویلین کی راہ دکھائی۔

بنگلا دیش کے آخری آؤٹ ہونے والے کھلاڑی تیج الاسلام تھے انہیں ساجد خان نے ایل بی ڈبلیو کیا۔

دوسری اننگ میں پاکستان کی جانب سے ساجد خان نے 4، شاہین شاہ  اور حسن علی نے 2،2 اور کپتان بابر اعظم نے ایک کھلاڑی کو آؤٹ کیا۔

اس سے قبل آج آخری دن کے کھیل کے آغاز میں ہی بنگلادیش کی پوری ٹیم اپنی پہلی اننگز میں 87 رنز پر آؤٹ ہوکر فالو آن کا شکار ہوگئی، میزبان ٹیم کو پہلی اننگز کا خسارہ پورا کرنے کے لیے  مزید 194 رنز درکار تھے۔

پہلی اننگز میں میزبان ٹیم کو فالو آن سے بچنے کے لیے 101 رنز بنانے تھے مگر وہ 14 رنز قبل ہی آل آؤٹ ہوگئی تھی۔

 پہلی اننگز میں قومی ٹیم کی طرف سے ساجد خان نے 8 وکٹیں لی اور شاہین شاہ نے ایک کھلاڑی کو آؤٹ کیا جبکہ ایک کھلاڑی رن آؤٹ ہوا ہے۔

آف اسپنر ساجد خان کی ریکارڈ ساز بولنگ

ساجد خان پاکستان کے دوسرے آف اسپنر بن گئے ہیں جنہوں نے ایک اننگز میں 8 وکٹیں لی ہیں، اس سے قبل آف اسپنر ثقلین مشتاق نے ایک اننگز میں 8 کھلاڑی آؤٹ کیے تھے۔

پاکستان کی جانب سے عبدالقادر نے 1987 میں انگلینڈ کے خلاف 56 رنز دیکر 9 وکٹیں حاصل کیں تھیں جبکہ سرفراز نواز نے 1979 میں آسٹریلیا کے خلاف 86 رنز دیکر 9 کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا تھا۔

اس کے علاوہ سکندر بخت اور عمران خان بھی ایک اننگز میں 8 کھلاڑیوں کو آؤٹ کرچکے ہیں۔

بنگلادیش کی جانب سے نجم الحسین شانتو نے 30 رنز بنائے جبکہ شیکب الحسن 34 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔ اس کے علاوہ میزبان ٹیم کا کوئی کھلاڑی ڈبل فیگر میں داخل نہیں ہوسکا۔

ڈھاکا ٹیسٹ میں چوتھے دن کا کھیل

چوتھے دن کے کھیل کے دوسرے سیشن میں پاکستان نے اپنی پہلی اننگز 4 وکٹوں کے نقصان پر 300 رنز پر ڈکلیئر کردی۔ کپتان بابر اعظم، اظہر علی، محمد رضوان اور فواد عالم نے اپنی نصف سنچریاں مکمل کیں۔

رضوان نے 86 گیندوں پر ایک چھکا اور 4 چوکوں کی مدد سے ففٹی بنائی جبکہ فواد عالم نے 96 گیندوں پر 7 چوکے لگا کر نصف سنچری اسکور کی۔

چوتھے روز کے کھیل کے آغاز میں قومی ٹیم کے کپتان بابر اعظم اور اظہر علی آؤٹ ہوگئے تھے۔ اس کے بعد رضوان اور فواد عالم کے درمیان 100 رنز سے زائد رنز کی شراکت داری ہوئی۔

پاکستان کی پہلی اننگز

قومی ٹیم کے آؤٹ ہونے والے کھلاڑی عبدﷲ شفیق، عابد علی، اظہر علی اور بابر اعظم تھے، پاکستان کی پہلی وکٹ 59 رنز پر گری تھی جب عبدﷲ شفیق 25 رنز بناکر آؤٹ ہوئے جبکہ دوسرے آؤٹ ہونے والے کھلاڑی عابد علی تھے، وہ 39 رنز بناسکے۔

پاکستان کی تیسری وکٹ 193 اور چوتھی وکٹ 197 رنز پر گری۔ تیسرے آؤٹ ہونے والے کھلاڑی اظہر علی تھے جنہوں نے 56 رنز کی اننگز کھیلی جبکہ چوتھی وکٹ بابر اعظم کی شکل میں گری، جنہوں نے 76 رنز بنائے۔

پاکستان کے دونوں اوپنرز کو بنگلادیش کے تیج الاسلام نے آؤٹ جبکہ تیسری وکٹ عبادت حسین اور چوتھی خالد احمد کے حصے میں آئی۔

ڈھاکا ٹیسٹ میں تقریباً 2 دن کا کھیل بارش سے متاثر ہوا

ڈھاکا میں مسلسل بارش کی وجہ سے تیسرے روز کا کھیل نہیں ہوسکا تھا جبکہ بارش کے باعث دوسرے روز کا کھیل 6 اعشاریہ 2 اوورز کے بعد ہی ختم کردیا گیا تھا اور پہلے دن کا کھیل کم روشنی کے باعث، وقت سے قبل ختم کردیا گیا تھا۔

دوسرے دن کے اختتام پر پاکستان نے 2 کھلاڑیوں کے نقصان پر 188 رنز بنائے تھے، جبکہ پہلے دن کے اختتام پر قومی ٹیم نے 2 وکٹوں کے نقصان پر 161 رنز بنائے تھے۔

پاکستان نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا

اس سے قبل ٹیسٹ میں پاکستان نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا اور اپنا وننگ کامبی نیشن کو برقرار رکھا۔

قومی ٹیم میں کپتان بابر اعظم کے علاوہ نائب کپتان محمد رضوان، عابد علی، عبدﷲ شفیق، اظہر علی، حسن علی، نعمان علی، شاہین شاہ آفریدی، ساجد خان اور فہیم اشرف شامل ہیں۔

دوسری جانب میزبان ٹیم بنگلادیش نے اپنی ٹیم میں 3 تبدیلیاں کیں، یاسر علی، سیف حسن اور ابو جاوید کی جگہ شکیب الحسن، محمود الحسن اور خالد حسین کو شامل کیا۔

خیال رہے کہ 2 ٹیسٹ میچز کی سیریز کے پہلے میچ میں پاکستان نے شاندار کھیل کا مظاہرہ کرتے ہوئے بنگلادیش کو 8 وکٹوں سے شکست دی تھی۔ 

کھیلوں کی خبریں سے مزید