آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
پیر2؍ربیع الثانی 1440ھ 10؍دسمبر2018ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
اگر امام سے دل صاف نہ ہوتو اس کے پیچھے نماز پڑھ سکتے ہیں؟

آپ کے مسائل اور اُن کا حل

سوال :۔ ہمارے گھر کے پاس ایک مسجد ہے،مسجد کا امام ایک نوجوان لڑکا ہے،ایک دوسری زیر تعمیر مسجد اور مدرسے کے لیے اس نے مجھ سے چندہ لیا۔جب رسید مانگی تو وہ جذباتی ہوگیا۔مجھے دو تین دفعہ جھڑک دیا۔میری عمر ستر برس ہے ،اب میرا دل اس نوجوان امام کے پیچھے نماز پڑھنے کو نہیں کرتا۔مسئلہ یہ ہے کہ دوسری مسجد میرے گھر سے کافی دور ہے۔مجھے چلنے میں کافی دشواری ہوتی ہے۔ایسی صورت میں مجھے کیا کرناچاہیے؟جب کہ رمضان المبارک کی آمد آمدہے،اورمجھے تراویح بھی پڑھنی ہے؟(حاجی آصف،کوٹری،جامشورو)

جواب:۔ ناحق بات پر طیش میں آنے اورآپ کی بزرگی کاخیال نہ کرنے کی وجہ سے امام نے سخت غلطی کی۔ آپ اسے معاف کرکے فضیلت حاصل کرسکتے ہیں ، ورنہ کم از کم اپنے آپ کوجماعت اورتراویح کی فضیلت سے محروم نہ رکھیں ۔بالفرض اس کے لیے دل صاف نہ ہو،پھر بھی اس کے پیچھے نماز وتراویح درست ہے۔

اپنے دینی اور شرعی مسائل کے حل کے لیے ای میل کریں۔

[email protected]

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں