آپ آف لائن ہیں
بدھ8؍ محرم الحرام1440ھ 19؍ستمبر2018ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

نائلہ فلک

دیوانگی میں کام یہ کرنے لگی تھی میں

الفت میں اُس کی روز ہی مرنے لگی تھی میں

برگِ خزاں کی طرح گزرنے لگی تھی میں

گلشن میں مثلِ پھول بکھرنے لگی تھی میں

اب بولنے لگی ہیں مرے گھر کی کھڑکیاں

تنہا، اُداس گھر سے بھی ڈرنے لگی تھی میں

ہم رقص خود ہی گردشِ دوراں رہی مرے

خود اپنے گھرمیں رقص جو کرنے لگی تھی میں

سب آئینے بکھرنے لگے ٹوٹ ٹوٹ کر

یادوں میںاُس کی جب بھی سنورنے لگی تھی میں

مجھ کو عزیزرہنے لگی ہے متاعِ زیست

زخموں کی تہہ میں درد کو بھرنے لگی تھی میں

مولا نے مجھ کو ہمت و قدرت جو بخش دی

طوفاں کے ساتھ ساتھ اُبھرنے لگی تھی میں

دیکھا ہے اپنے عشق کا تارا زمین پر

اک دن فلک سے جونہی گزرنے لگی تھی میں

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں