آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
جمعرات16؍شوال المکرم 1440ھ 20؍جون 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

ماسکو (جنگ نیوز /ایجنسیاں)امریکا کے بعد روس نے بھی افغانستان کو داعش گڑھ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ شام کی لڑائی میں حصہ لینے والے دہشتگرد شمالی افغان سرحدی علاقوں میں جمع ہورہے ہیں،تفصیلات کے مطابق روسی خفیہ ایجنسی ایف ایس بی کے سربراہ الیگزانڈر بورٹنیکوف نے خبردار کیا ہے کہ افغانستان کے شمالی سرحدی علاقوں میں دہشتگردوں نے جمع ہونا شروع کر دیا ہے۔ اس سے قبل امریکی خفیہ ایجنسی کے ایک اعلیٰ عہدیدار نے بھی کہا تھا کہ شام اور عراق میں خونریز حملے کرنے والے داعش کے دہشتگرد وہاں قائم کی گئی ’خلافت‘ کے خاتمے کے بعد افغانستان پہنچ رہے ہیں۔تفصیلات کے مطابق ایف ایس بی کے سربراہ الیگزانڈر بورٹنیکوف کاتاجکستان کے دور پر کہنا تھاکہ پانچ ہزار کے قریب داعش کے دہشتگرد وسطی ایشیائی ممالک کی سرحدوں پر مختلف گروپوں کی صورت میں جمع ہو چکے ہیں۔ بورٹنیکوف کے مطابق یہ دہشتگرد وہ ہیں، جو شام میں جنگی کارروائیوں میں حصہ لے چکے ہیں۔ اس تناظر میں روس نے وسطی ایشیائی ریاستوں کے ساتھ سرحدی نگرانی کو سخت کر دیا ہے۔

امریکی عہدیدار نے مزید یہ بھی دعویٰ کیا تھا کہ داعش کے کچھ اراکین افغانستان پہنچ کر اپنا تجربہ اور مہارت مقامی عسکریت پسندوں کو فراہم کر رہے ہیں۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں