آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
جمعہ20؍محرم الحرام 1441ھ 20؍ستمبر 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

عالمی سطح پر خسرہ کا مرض تین گنا بڑھ گیا، عالمی ادارہ صحت

پیرس (رضا چوہدری) ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن نے دنیا میں ویکسین کے خلاف عوامی مزاحمت پر بڑھتی تشویش کے درمیان ، سال 2018 کے اسی عرصے کے مقابلے میں سال کے پہلے سات مہینوں کے دوران خسرہ کےامراض عالمی سطح پر تین گنا بڑھ گئے۔ عالمی ادارہ صحت کا کہنا ہے کہ اس سال اب تک ، دنیا بھر میں خسرہ کے 364،808 واقعات رپورٹ ہوئے ہیں ، جبکہ اس سے پہلے ایک سال قبل پہلے سات ماہ کے دوران یہ تعداد 129،239 تھی۔ڈبلیو ایچ او کے ترجمان کرسچن میئر نے صحافیوں کو بتایا کہ یہ تعداد 2006 کے بعد سے "سب سے زیادہ (رجسٹرڈ) ہیں"۔ ڈبلیو ایچ او کے مطابق ، یہ تعداد خاص طور پر تشویشناک ہے کیونکہ خیال کیا جاتا ہے کہ دنیا بھر میں خسرہ میں سے صرف ایک میں سے صرف ایک کیس رپورٹ کیا گیا ہے۔خسرہ ، جو انتہائی متعدی ہے ، دو خوراکوں کی ویکسین کے ذریعے پوری طرح سے روکا جاسکتا ہے ، لیکن عالمی ادارہ صحت نے حالیہ مہینوں میں ویکسی نیشن کی شرحوں پر خطرے کی گھنٹی بجا دی ہے۔ ڈبلیو ایچ او نے بتایا کہ جمہوریہ کانگو ، مڈغاسکر اور یوکرین میں سب سے زیادہ تعداد درج کی گئی۔

اقوام متحدہ کی ہیلتھ ایجنسی نے زور دیا ، مڈغاسکر میں ، جس نے رواں سال کے پہلے نصف حصے کے دوران 127،500 کے قریب مقدمات درج کیے تھے ، حالیہ مہینوں میں ہنگامی قومی ویکسی نیشن مہم کے بعد تعداد میں کافی کمی واقع ہوئی ہے۔افریقی خطے میں خسرہ کے واقعات میں دنیا بھر میں اضافہ ہوچکا ہے جب کہ افریقہ کے خطے میں سال بہ سال کے معاملات میں 900 فیصد اضافہ دیکھنے کو مل رہا ہے جب کہ مغربی بحر الکاہل میں یہ کیس 230 فیصد بڑھ گئے ہیں۔ انگولا ، کیمرون ، چاڈ ، قازقستان ، نائیجریا ، فلپائن ، سوڈان ، جنوبی سوڈان اور تھائی لینڈ میں اس بیماری کے بڑے پھیلاؤ دیکھنے میں آئے ہیں۔

یورپ سے سے مزید