آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
جمعہ24؍ ربیع الاوّل 1441ھ 22؍ نومبر 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
تازہ ترین
آج کا اخبار
کالمز

مصر میں دریائے نیل کے مغربی کنارے سے لگ بھگ چار ہزار برس قدیم 20 لکڑیوں کے تابوت دریافت ہوئے ہیں۔

مصر کی حکومت نے ان تابوتوں کی دریافت کو مصری آثار قدیمہ کے حوالے سے ایک اہم دریافت قرار دیا ہے۔

واضح رہے کہ حالیہ برسوں میں یہ سب سے بڑی اور اہم آرکیالوجیکل دریافت ہے۔ تابوت اساسیف نامی علاقے سے دریافت ہوئے ہیں جو دریائے نیل کے مغرب میں واقع آثارقدیمہ پر مشتمل قبرستان ہے۔

منگل کو مصری وزارت قدیم نوادرات نے محفوظ اور سربمہر تابوت کی تصاویر ٹوئٹ کی ہیں، پتھر کے یہ تابوت ایک بڑے مقبرے میں موجود تھے، جبکہ ان کے چہروں اور ہاتھوں پر بنایا گیا نقش ونگار اور رنگ جو کہ سرخ، سبز، سفید اور سیاہ ہیں اب بھی اپنی اصل حالت میں موجود ہیں، جوکہ صدیاں گزرجانے کے بعد بھی ماند نہیں پڑیں۔

گوکہ مصری حکام نے ان تابوتوں کے بارے میں یہ تو نہیں بتایا کہ یہ کس عہد کے ہیں لیکن جس جگہ سے یہ دریافت ہوئے ہیں وہ قدیم مصری شہر تھیبس کا حصہ ہے۔

تھیبس قدیم مصر کا شاہی دارالحکومت ہوا کرتا تھا، ابتدائی نشانیوں سے اندازہ لگایا جارہا ہے کہ یہ گیارہویں بادشاہوں کے عہد کا ہے جو کہ 2081سے لیکر 1939قبل مسیح میں گزرے ہیں۔

بین الاقوامی خبریں سے مزید
خاص رپورٹ سے مزید