آپ آف لائن ہیں
پیر10؍صفر المظفّر 1442ھ 28؍ستمبر 2020ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

پاکستان کیلئے گوگل کی نوکری چھوڑنے والی تانیہ ایدرس ملکی ترقی کی خواہشمند



گوگل کی ایک سینیئر پاکستانی ایگزیکٹو تانیہ ایدرس پاکستان کی خدمت کرنے کے لیے امریکی کمپنی کا اہم عہدہ چھوڑ کر ملک واپس آگئیں۔ 

تانیہ اس وقت سنگاپور میں واقع گوگل کے علاقائی ہیڈ آفس میں اہم پوزیشن پر فائز تھیں لیکن وہ اپنی پرکشش نوکری چھوڑ کر پاکستان میں وزیراعظم عمران خان کے ڈیجیٹل وژن پروگرام کی سربراہی کریں گی۔

تانیہ نے امریکا کی میساچیوسٹس انسٹی ٹیوٹ آف ٹیکنالوجی سے ایم بی اے کی ڈگری حاصل کی ہے۔

ڈیجیٹل پاکستان پروگرام کی افتتاحی تقریب سے خطاب میں تانیہ ایدرس نے اپنے جذبات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ میرا صرف ایک ایجنڈہ ہے اور وہ یہ ہے کہ میں پاکستان کو ترقی کرتا دیکھنا چاہتی ہوں۔

تانیہ کا کہنا تھا کہ جب یہ حکومت آئی تو مجھے محسوس ہوا کہ میں پاکستان جاکر کچھ کرسکتی ہوں کیونکہ مجھے اعتماد تھا کہ اس حکومت کو عام پاکستانی کے مستقبل کی پرواہ ہے۔

انہوں نے بتایا کہ پی ٹی آئی رہنما جہانگیر ترین نے انہیں پاکستان آنے پر رضامند کیا اور وزیراعظم اور انفارمیشن ٹیکنالوجی کے وزیر سے ملاقات کروائی جس سے مجھے واپس پاکستان آنے کا حوصلہ ملا۔

دوسری جانب ٹوئٹر پر اپنے بیان میں تانیہ ایدرس نے کہا ہے کہ ’میں وزیراعظم عمران خان اور جہانگیر ترین کا شکریہ اداکرتی ہوں کہ جنہوں نے مجھے موقع دیا تاکہ میں اپنے ملک کو کچھ لوٹا سکوں‘۔

تانیہ ایدرس کا کہنا ہے کہ سب کی حمایت سے ہم انشاءاللّٰہ ڈیجیٹل پاکستان وژن کو حقیقت میں تبدیل کردیں گے۔

آخر میں ان کا کہنا تھا جیسا کہ وزیراعظم کہتے ہیں ' گھبرانا نہیں ہے'۔

تقریب میں وزیراعظم عمران خان نے بھی خطاب کیا اور اپنے خطاب میں انہوں نے ڈیجیٹل پاکستان منصوبہ پیش کرنے والی تانیہ ایدرس کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ انہوں نے گوگل کی ملازمت چھوڑ کر پاکستان آنے کا بڑا فیصلہ کیا۔

انہوں نے کہا کہ وہی لوگ زندگی میں اوپر جاتے ہیں جو بڑے فیصلے کرتے ہیں اور چیلجز کا سامنا کرتے ہیں جبکہ جو لوگ چیلنجز کا سامنا نہیں کرتے ان کی اوپر جانے کی صلاحیت ختم ہوجاتی ہے اور وہ بوڑھے ہوجاتے ہیں، انسان بوڑھا تب ہوتا ہے جب چیلنج ختم ہوجاتا ہے۔

وزیراعظم عمران خان نے یہ بھی کہا تھا کہ دنیا میں پاکستان کی شناخت بدل چکی ہے، اب ہم مسلم امہ کو اکٹھا کرنے میں اپنا کردار ادا کریں گے۔ 

تقریب کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے بتایا تھا کہ ڈیجیٹل پاکستان میں 5 پیرامیٹرزکا تعین کیا گیا ہے، اس سے انفارمیشن ٹیکنالوجی کے شعبےکی استعداد میں اضافہ ہوگا۔

فردوس عاشق اعوان نے مزید بتایا کہ ای گورننس سے شفافیت کو فروغ ملےگا، ڈیجیٹیلائزیشن سے ہر شعبے میں جدت لانے میں مدد ملےگی اور اس کےذریعےعام آدمی کی معلومات تک رسائی ہوگی۔

قومی خبریں سے مزید