آپ آف لائن ہیں
اتوار18؍ذی الحج 1441ھ 9؍اگست 2020ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

کورونا وائرس ہوا سے پھیلتا ہے، 12 ملکوں کے سائنس دانوں کا نیا نظریہ

کورونا وائرس ہوا سے پھیلتا ہے، سائنس دانوں کا نیا نظریہ 


کراچی (نیوزڈیسک) کورونا وائرس کے بارے میں کہا جاتا تھا کہ کھانسنے یا چھیکنے یا زور سے بولنے سے مریض سے منہ یا ناک سے خارج ہونے والے باریک محلول ذرات سے یہ وائرس دوسرے شخص کو شکار کرتا ہے۔

مگر اب بارہ ملکوں کے ڈھائی سو کے قریب سائنس دانوں کا کہنا ہے کہ یہ وائرس ہوا کے ذریعے انفیکشن پھیلاتا ہے اور بند جگہوں پر بھی اس سے بچنے کے لیے احتیاط کرنی چاہیے۔

نیویارک ٹائمز کے مطابق بارہ ملکوں کے 239 سائنس دانوں نے عالمی ادارہ صحت کے نام ایک کھلے خط میں کہا ہے کہ وہ کورونا وائرس سے بچنے کے لیے اپنی ہدایات پر نظر ثانی کرے۔

سائنس دانوں کا کہنا ہے کہ کورونا وائرس ہوا سے پھیلتا ہے، یعنی وائرس کے ذرات بند جگہوں میں گردش کرتے ہیں اور سانس لیتے ہوئے یہ ذرات انسانی جسم کے اندر جا سکتے ہیں۔

اہم خبریں سے مزید