آپ آف لائن ہیں
جمعرات 15؍ ذی الحج 1441ھ6؍اگست2020ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

کوویڈ19 کے50 فیصد کیسز خاموشی سے پھیلانے والوں کا نتیجہ ہیں

لندن(جنگ نیوز)ویسے تو کوئی بھی خود کو نئے کورونا وائرس سے ہونے والی بیماری کووڈ 19 کو بڑے پیمانے پر پھیلانے والا جسے طبی زبان میں سپر اسپریڈر کہا جااتا ہے، تصور نہیں کرسکتا، مگر اس کے بیشتر کیسز خاموشی سے انہیں پھیلانے والوں کا نتیجہ ہوتے ہیں۔طبی جریدے پروسیڈنگز آف دی نیشنل اکیڈمی آف سائنسز میں شائع تحقیق میں بتایا کہ کورونا وائرس کے ایسے مریض جن میں واضح علامات ظاہر نہیں ہوتیں، وہ امریکا میں لگ بھگ 50 فیصد کیسز کا باعث بنے۔تحقیق میں دریافت کیا گیا کہ بغیر علامات والے یا علامات ظاہر ہونے سے چند دن قبل ہی مریض اس وائرس کو دیگر صحت مند افراد تک پہنچاسکتے ہیں اور وہ اس وبائی بیماری کے پھیلاؤ کا مرکزی عنصر ہیں۔تحقیق میں تخمینہ لگایا گیا کہ ایک تہائی سے زائد خاموشی سے اس وائرس کو پھیلانے والے افراد کی شناخت اور مستقبل میں وبا کو پھیلنے سے روکنے کے لیے الگ کرنے کی ضرورت ہے۔یالے یونیورسٹی کی اس تحقیق میں کورونا وائرس کے پھیلاؤ کے ماڈلز استعمال کرکے تعین کیا گیا کہ کتنی تعداد میں لوگ خاموشی سے کووڈ 19 کو پھیلارہے ہیں۔

یورپ سے سے مزید