آپ آف لائن ہیں
بدھ3؍ربیع الاوّل 1442ھ21؍اکتوبر 2020ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

بل گیٹس کے گمنام ہیروز میں پاکستانی نوجوان بھی شامل

مائیکروسوفٹ کے بانی بل گیٹس نے کوروناوائرس کے دوران اپنے ممالک میں کمزور طبقے کی خدمت کرنے والے 7 گمنام ہیروز کی فہرست تیار کی ہے جس میں افغانستان اور افریقہ سمیت پاکستان کے نوجوان کو بھی شامل کیا گیا۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر بل گیٹس نے ایک ویڈیو جاری کی ہے جس میں انہوں نے کورونا وبا کے دوران خدمات انجام دینے والے انسان دوست گمنام ہیروز کی خدمات کا اعتراف کرتے ہوئے انہیں خراج تحسین پیش کیا۔

پاکستان میں صوبہ بلوچستان کے ضلع خضدار کی تحصیل نال سے تعلق رکھنے والے سکندر بزنجو کا نام بھی بل گیٹس کے گمنام ہیروز میں شامل ہے۔

گیٹس نوٹس میں شائع مضمون کے مطابق 29 سالہ سکندر بزنجو نے عالمی وبا کے دوران اپنے ساتھیوں کے ساتھ مل کر بلوچستان کے10ہزار گھرانوں کے راشن کیلئے فنڈز جمع کیے۔

انہوں نے کورونا وائرس کے دوران طبی عملے کے لیے ذاتی حفاظتی آلات، ماسک، فیس شیلڈ اور ہینڈ سینیٹائزر کا بھی انتظام کیا۔

بلوچستان سے تعلق رکھنے والے اس نوجوان نے ڈاکٹر خالد اسماعیل، ڈاکٹر یاسر بلوچ کے ساتھ مل کرایک ٹیم تشکیل دی تھی جس نے کورونا وبا اور لاک ڈاؤن کے دنوں میں غریب لوگوں کی مدد کی اور طبی عملے کو ہر ممکن حفاظتی اشیا فراہم کیں۔

بل گیٹس نے سکندر بزنجو کے متعلق لکھا کہ ’بلوچستان سے تعلق رکھنے والے اس نوجوان نے کورونا کے خلاف جنگ لڑی اور10 ہزار سے زائد لوگوں میں راشن تقسیم کیا۔‘

 ’بلوچستان سے تعلق رکھنے والا نوجوان سکندر بزنجو نے کورونا کے خلاف جنگ میں پیش پیش رہا اور تقریباً 10 ہزار سے زائد لوگوں میں راشن تقسیم کیا جبکہ فرنٹ لائن پر لڑنے والے طبی عملے کو فیس ماسک، فیس شیلڈ، سینیٹائزر سمیت دیگر آلات فراہم کیے۔‘

بل گیٹس کے اس اقدام پر سکندر بزنجو کا کہنا تھا کہ ’یہ میری یا میری ٹیم کی کامیابی نہیں، مجھے یہ دیکھ کر خوشی ہورہی ہے کہ عالمی سطح پر بلوچستان کا نام روشن ہوا، اس بات پر مجھے فخر بھی ہے۔‘

اُن کا کہنا تھا کہ ’دنیا کا ہر شخص بل گیٹس کو جانتا ہے، میرے گاؤں اور دیگر اضلاع کے لوگ بھی اس بات پر بہت خوش ہوئے کہ بل گیٹس نے ہماری خدمات کا اعتراف کیا۔‘

خاص رپورٹ سے مزید