آپ آف لائن ہیں
جمعرات4؍ ربیع الاوّل 1442ھ 22اکتوبر2020ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

واٹس ایپ گفتگو کو محفوظ سمجھنے والے یہ سات چیزیں پڑھ لیں

میسجنگ ایپ واٹس ایپ کی گفتگو کو محفوظ بنالینا دیکھنے میں تو آسان چیز ہے لیکن یہ جانے بغیر کہ انٹرنیٹ پر چیزیں کس طرح کام کرتی ہیں، یہ اچھا آئیڈیا نہیں ہے۔

ہم اپنے عزیزوں، دوستوں، آفس اور کلاس فیلوز سے گفتگو کرتے ہیں جس میں ہم اس ایپ کا بھرپور فائدہ اٹھاتے ہوئے اپنی ضروری فائلز بھی ٹرانسفر کرتے ہیں۔

واٹس ایپ پر لاگ ان کرنے کے لیے ٹو-فیکٹر اتھینٹیکیشن قابل فہم ہے لیکن کچھ چھوٹی چیزیں آپ کو اس ایپ سے باہر نکال پھینک سکتی ہیں۔

اپنی واٹس ایپ چیٹ کا بیک اپ بنانے سے قبل ان سات چیزوں کا جائزہ لے لیں۔


گوگل ڈرائیو اور ایپل آئی کلاؤڈ پر چیٹ محفوظ نہیں


واٹس ایپ صرف اپنے پلیٹ فارم کی حد تک ہی ایک صارف کی گفتگو کو محفوظ رکھ سکتا ہے، اگر صارف اپنی گفتگو کو نکال کر کسی دوسرے پلیٹ فارم کی جانب لے جائے تو ان کے محفوظ ہونے پر سوالیہ نشان کھڑے ہوجاتے ہیں۔

زیادہ تر موبائل صارف گوگل ڈرائیو یا پھر آئی کلاؤڈ پر اپنی گفتگو کا بیک اپ بنانے کی کوشش کرتے ہیں جو ان کے لیے مشکل ہوسکتا ہے۔



مضبوط واٹس ایپ پن


واٹس ایپ اپنے صارفین کے ڈیٹا کو محفوظ بنانے کے لیے ایپ پر لاگ ان کے لیے ٹو-فیکٹر اتھینٹیکیشن کا طریقہ کار فراہم کرتا ہے اور یہ ایک 6 ہندسوں کا کوڈ ہے۔

اس کوڈ کی مدد سے بھی آپ کا اکاؤنٹ محفوظ رہتا ہے، تاہم اگر کوئی آپ کے موبائل اور نمبر پر کوئی ٹرک بھی استعمال کر لے لیکن وہ اس ٹو-فیکٹر اتھینٹیکیشن کے ذریعے کوڈ حاصل نہیں کرسکتا۔

بالعموم یہ تجویز دی جاتی ہے کہ صارفین اپنے موبائل کی ٹو-فیکٹر اتھینٹیکیشن کو آن رکھیں۔



غلط ای میل اور پن سے اکاؤنٹ کی بندش کا خطرہ


اسی طرح اگر آپ اپنے پن کوڈ کو بھول جائیں تو اس کے لیے ضروری ہے کہ آپ نے ایپ کو اپنا درست ای میل فراہم کیا ہوا ہے۔

تاہم اگر واٹس ایپ پر ای امیل درست فراہم نہیں کی جاتی تو وہ صارف کے اکاؤنٹ کو لاگ ان نہیں کرتا۔


چیٹ کی منتقلی سے نقصان کا خطرہ


یہ بالکل اسی طرح ہے کہ آپ اپنی گفتگو کا بیک اپ بنا کر اسے دوسرے پلیٹ فارم پر محفوظ کر رہے ہوں۔


مائیکرو ایس ڈی کارڈ پر منتقلی بھی خطرناک


یہ ایک ایسا عمل ہے جو واٹس ایپ استعمال کرنے والا تقریباً ہر صارف ہی کرتا ہے یا پھر وہ اسے آسانی سے کر سکتا ہے۔

واٹس ایپ اپنے فیچرز کی مدد سے صارف کو اپنی چیٹ موبائل میں یا پھر مائیکرو ایس ڈی کارڈ میں سیو کرنے کے قابل بناتا ہے۔


واٹس ایپ گفتگو کو محفوظ سمجھنے والے یہ سات چیزیں پڑھ لیں


ہیکنگ سے بچانے کیلئے چیٹ ڈیلیٹ کردیں


انٹرنیٹ کی دنیا میں ہیکنگ کا کوئی توڑ دکھائی نہیں دیتا اور آئے دن یہ بدعنوان عناصر لوگوں کی نجی زندگیوں پر بھی حملے کرتے ہیں۔

اسی کے پیش نظر ماہرین کی جانب سے واٹس ایپ استعمال کرنے والے افراد کو یہ تجویز دی جاتی ہے کہ کی وہ اپنی کم از کم غیر ضروری چیٹ کو ڈیلیٹ کر دیں۔


واٹس ایپ میں اینڈرائیڈ سے آئی فون پر چیٹ کی منتقلی کی اجازت نہیں


واٹس ایپ استعمال کرنے والے صارفین یہ بات جان لیں یہ واٹس ایپ اپنی چیٹ کو اینڈرائیڈ سے آئی فون پر منتقل کرنے کی اجازت نہیں دیتا۔

اس حوالے سے کئی تھرڈ پارٹی ایپس موجود ہیں جو اس کام کو انجام دینے کا دعویٰ کرتی ہیں۔

تاہم کبھی کبھار یہ ایپس درست کام نہیں کر پاتیں یا پھر ان کے ایپس کے ذریعے آپ کی چیٹ کے چوری ہونے کا براہِ راست خطرہ ہے۔


خاص رپورٹ سے مزید