آپ آف لائن ہیں
بدھ یکم رمضان المبارک 1442ھ14؍اپریل2021ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

بھارتی حکومت کی سوشل میڈیا اور او ٹی ٹی پلیٹ فارم کو مواد کیلئے ہدایات جاری

نئی دہلی (مانیٹرنگ ڈیسک)بھارتی حکومت نے سوشل میڈیا اور او ٹی ٹی پلیٹ فارم پر مواد کے حوالے سےہدایات جاری کی ہیں۔ نئی گائیڈ لائنس کے مطابق شکایت کے 24 گھنٹے کے اندر سوشل میڈیا سے قابل اعتراض موادکو ہٹانا ہوگا۔ اسی کے ساتھ ہی کمپنیوں کو شکایت نمٹانےکا نظام اور شکایات نمٹانے کیلئے افسر بھی رکھنا ہوگا۔ اب نیٹ فلکس، امیزون جیسے او ٹی ٹی پلیٹ فارم ہوں یا فیس بک، ٹویٹر جیسے سوشل میڈیا پلیٹ فارم سب کے لیے سخت ضابطے بن گئے ہیں۔ 24 گھنٹے میں شکایت کا رجسٹریشن ہوگا اور 15 دنوں میں اس کونمٹاناا ہوگا۔ حکومت تین ماہ میں ڈیجیٹل موادکو با ضابطہ بنانے کیلئے قانون نافذ کرنے کی تیاری کررہی ہے۔بھارت کےمرکزی وزیر روی شنکر پرساد نے پریس کانفرنس کے دوران کہا کہ ہم نے کوئی نیا قانون نہیں بنایا ہے۔ ہم نے یہ قانون موجودہ آئی ٹی ایکٹ کے دائرے میں رہتے ہوئے بنایا ہے۔ ہم پلیٹ فارمز پر بھروسہ کرتے ہیں کہ وہ قوانین کا پورے طریقے سے اطلاق کریں گے۔ ان قوانین کا فوکس سیلف ریگولیشن پر ہے۔ اطلاعات و نشریات کے مرکزی وزیر پرکاش جاوڈیکر ، مواصلات اور آئی ٹی کے وزیر روی شنکر پرساد نےگائڈلائنس جاری کیں۔ روی شنکر پرساد نے کہا کہ بھارت میں سوشل میڈیا پلیٹ فارم کی تجارت کرنے کے لیے خیر مقدم ہے۔ حکومت تنقید کے لیے تیار ہے لیکن سوشل میڈیا کے غلط استعمال پر بھی شکایت کا فورم ہونا چاہئے۔ اس کا غلط استعمال روکنا ضروری ہے۔انہوں نے بتایا کہ بھارت میں واٹس ایپ کے 53 کروڑ، فیس بک کے 40 کروڑ سے زیادہ اور ٹویٹر پر ایک کروڑ سے زائد صارفین ہیں۔ بھارت میں ان کا کافی استعمال ہوتا ہے لیکن جو اندیشے ہیں ان پر کام کرنا ضروری ہے۔

دل لگی سے مزید