آپ آف لائن ہیں
منگل7؍رمضان المبارک 1442ھ 20؍اپریل2021ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

وزیراعظم کو سادہ اکثریت یعنی 172 ارکان کے ووٹ درکار ہوں گے


سینیٹ الیکشن میں یوسف رضا گیلانی کے ہاتھوں حفیظ شیخ کی شکست کے بعد وزیر اعظم عمران خان نے قومی اسمبلی سے اعتماد کا ووٹ لینے کا فیصلہ کیا ہے۔

آئین کے مطابق اگر صدر مملکت کو لگے کہ وزیر اعظم قومی اسمبلی کے ارکان کی اکثریت کی حمایت کھوچکے ہیں تو وہ انہیں ایوان سے اعتماد کا ووٹ لینے کا حکم دیں گے۔

وزیر اعظم کو سادہ اکثریت یعنی 172 ارکان کا ووٹ درکار ہوں گے۔

وزیراعظم عمران خان نے آج قوم سے خطاب کرتے ہوئے پرسوں (ہفتہ) قومی اسمبلی سے اعتماد کا ووٹ لینے کا اعلان کیا۔

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) والوں کو پیغام ہے کہ اقتدار گیا تو مجھے کوئی فرق نہیں پڑتا۔

ان کا کہنا تھا کہ چاہے اپوزیشن میں ہوں، یا اسمبلی سے باہر ہوں، ان کو نہیں چھوڑوں گا، میں ان کے خلاف قوم کو باہر نکالوں گا۔ جب تک زندہ ہوں ملک میں قانون کی بالادستی کے لیے کام کروں گا۔

اعتماد کے ووٹ کے لیے وزیر اعظم کو سادہ اکثریت یعنی 172 ارکان کا ووٹ درکار ہوں گے۔

قومی خبریں سے مزید