آپ آف لائن ہیں
جمعہ3؍رمضان المبارک 1442ھ 16؍اپریل2021ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

بلاول بھٹو اور چوہدری شجاعت میں دلچسپ مکالمہ، اندرونی کہانی سامنے آگئی


پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کی چوہدری برادران سے ملاقات میں دلچسپ مکالمہ ہوا جس کی اندرونی کہانی سامنے آگئی ہے۔

بلاول بھٹو کی چوہدری برادران سے ملاقات ایک گھنٹہ 25 منٹ تک جاری رہی، جس میں پی پی چیئرمین نے اُن سے چیئرمین سینیٹ کے الیکشن کے لیے یوسف رضا گیلانی کی حمایت مانگی۔

چوہدری برادران نے بلاول بھٹو کی درخواست کے باوجود چیئرمین سینیٹ کے لیے یوسف رضا گیلانی کی حمایت سے معذرت کرلی۔


چوہدری شجاعت حسین نے بلاول بھٹو کو جواب دیتے ہوئے کہا کہ ہم حکومت کے اتحادی ہیں اور اُن سے ووٹ دینے کا وعدہ کر چکے ہیں۔

ذرائع کے مطابق اس موقع پر چوہدری شجاعت نے بلاول بھٹو زرداری سے کہا کہ آپ کی والدہ بینظیر بھٹو ہماری بہت عزت کرتی تھیں۔

ذرائع کے مطابق ق لیگ کے سربراہ نے مزید کہا کہ آپ کے نانا ذوالفقار علی بھٹو اور بینظیر بھٹو کے بعد آپ تیسری نسل ہیں جو ہمارے پاس آئے ہیں۔

ذرائع کے مطابق اس پر بلاول بھٹو زرداری نے چوہدری شجاعت حسین سے کہا کہ پھر تو آپ ہمیں خالی نہ بھیجیں، یوسف رضا گیلانی کو چیئرمین سینیٹ کے لیے ووٹ دینے کا وعدہ کرلیں۔

ذرائع کے مطابق ق لیگ کے سربراہ نے پی پی چیئرمین کو جواب دیتے ہوئے کہا کہ ہم آپ سے ایسا وعدہ نہیں کرتے جو ہمارے اصولوں کے خلاف ہو۔

ذرائع کے مطابق بلاول بھٹو نے چوہدری شجاعت سے گفتگو میں کہا کہ جب پرویز الٰہی ڈپٹی وزیراعظم تھے تو میرے والد نے ان کا پورا ساتھ دیا تھا۔

چوہدری شجاعت حسین نے پی پی چیئرمین کو جواب دیا کہ آصف علی زرداری ذہین آدمی ہیں، میں ان کی عزت کرتا ہوں۔

ذرائع کے مطابق دوران ملاقات بلاول بھٹو زرداری نے پنجاب میں عثمان بزدار کی حکومت کے خلاف تحریک عدم اعتماد پر بات کی۔

تاہم ق لیگ کے ذرائع نے بزدار حکومت کے خلاف تحریک عدم اعتماد پر بلاول بھٹو سے بات ہونے کی تصدیق کرنے سے انکار کردیا۔

قومی خبریں سے مزید