درآمدی متبادل اور برآمدی توسیع کیلئے بجٹ مراعات پر کام جاری
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

درآمدی متبادل اور برآمدی توسیع کیلئے بجٹ مراعات پر کام جاری

اسلام آباد (خالد مصطفیٰ) وزیراعظم کے مشیر برائے کامرس، ٹیکسٹائل اور انویسٹمنٹ عبدالرزاق دائود کا کہنا ہے کہ درآمدی متبادل اور برآمدی توسیع کے لیے بجٹ مراعات پر کام جاری ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ازبکستان مارکیٹ تک جلد رسائی حاصل کرکے صنعتی مقاصد پورے کریں گے۔ تفصیلات کے مطابق، حکومت بجٹ مراعات 2021-22پر کام کررہی ہے تاکہ اب تک کے ملک کو صنعت کی راہ پر گامزن کرنے کے ثمرات کو مستحکم کیا جاسکے، درآمدات کے متبادل کی ٹھوس بنیاد بنائی جارہی ہے اور ملک کی برآمدات پر بھرپور توجہ مرکوز کی گئی ہے۔ بجٹ تجاویز برائے 2021-22 کے حوالے سے وزارت کامرس سبقت حاصل کیے ہوئے ہے۔ وزارت کامرس برآمدات میں اضافے کے لیے متعدد مراعات پر کام کررہی ہے ان میں پہلے سال برآمدکنندن کو 4 فیصد ایکسپورٹ ویلیو کی فراہمی، دوسری سال 3 فیصد، تیسرے سال 2 فیصد اور چوتھے سال ایک فیصد ایکسپورٹ ویلیو سن سیٹ شق کے تحت فراہم کی جائے گی۔ وزیراعظم کے مشیر برائے کامرس، ٹیکسٹائل اور انویسٹمنٹ عبدالرزاق دائود نے دی نیوز کو بتایا ہے کہ مراعات کا یہ پیکج محدود مدت کے لیے ہوگا۔ اس سے قبل فنانس ڈویژن اور ایف بی آر بجٹ بناتے تھے لیکن اس مرتبہ یہ ذمہ داری وزارت کامرس ادا کررہا ہے اور وہ اس ضمن میں نئی جدت سامنے لائے ہیں۔ مذکورہ وزارت بجٹ تجاویز کے حوالے سے ایف بی آر کی رائے بھی لے رہی ہے۔

اہم خبریں سے مزید