سائنسی خبرنامہ: زمین کے بارے میں کچھ اہم معلومات

November 02, 2019
 

اختر علی شاہ

زمین نظام شمسی کے آٹھ سیاروں میں سورج کی طرف سے تیسرا سیارہ ہے.نیلے ماربل سیارے اور ٹیرا “Terra” یا گئیا “Gaia” کے بعد زمین سورج سے تیسرا نزدیک ترین سیارہ ہے.

سائنسی تحقیق سے پتہ چلا ہے کہ زمین کی عمر 4.54 ارب سال ہے

زمین نہ صرف انسان کا بلکہ دیگر لاکھوں جانداروں کا بھی گھر ہے ، کائنات میں واحد مقام ہے، جہاں زندگی کا وجود پایا جاتا ہے۔ اس کی سطح پر زندگی کی شروعات تقریبا ایک ارب سال پہلے ظاہر ہوئی۔

حیاتیات کے پہلنے پھولنے کے لیےاوزون کی تہہ وجود میں آئی. زمین کے مقناطیسی میدان کے ساتھ سورج کی نقصان دہ تابکاری کو روکنے والی دوسری تہہ اوزون ہے۔

زمین کا اوپری حصہ کئی سخت طبقات یا ٹیکٹانکس پلیٹوں میں تقسیم ہے جو کہ جیولوجیکل تاریخ کے دوران ایک مقام سے دوسرے مقام کو کہسک رہی ہیں۔

زمین کی سطح کا سارا علاقہ تقریباً 510،072،000 کلومیٹر2 ہے،جس میں سے 148،940،000 کلومیٹر2یعنی 29.2% فیصد حصے پر زمیناور 361،132،000 کلومیٹر2یعنی 70.8% فیصد حصے پر پانی موجود ہے۔

زمین کی فضا میں78.08٪ فیصد نائٹروجن (n2) (خشک ہوا)،20.95٪ فیصد آکسیجن (O2)،0.930٪ فیصد آرگان،0.039٪ کاربن ڈائی آکسائیڈ، پانی (متغیر آب و ہوا) کی صورت میں موجود ہے۔

زمین کی تخلیق میں مندرجہ ذیل عناصرشامل ہیں۔٪34.6 لوہا،٪29.5 آکسیجن،٪15.2 سلیکون،٪12.7 میگنیشئم،٪2.4 نکل،٪1.9 گندھک کا تیزاب،0.05٪ ٹائٹینیم فی صد باقی دیگر عناصر شامل ہیں

زمین پر زیادہ سے زیادہ درجہ حرارت 56.7 °سینٹی گریڈ اوسط 15 ° سینٹی گریڈ اور کم سے کم درجہ حرارت منفی 89.2 ° سینٹی گریڈ ہے۔فضا میں ہوا کا دباؤ 101.325 کلو پاسکل ہے جو کہ زندگی کے لئے بہترین ہے۔

رقبہ کے لحاظ سے سطح زمین کا تقریباً 71 فی صد نمکین پانی کے سمندر سےڈھکا ہے، باقی 29 فی صد میں براعظم اور جزائراور میٹھے پانی کی جھيلیں وغیرہ شامل ہیں. پانی ہی زندگی کی شروعات ہے اور پانی زندگی کی تمام اقسام کے لئے ضروری ہے، جس کا فی الحال ہمارے نظام شمسی میں ہماری زمین کے علاوہ دیگر کسی سیارے کی سطح پر وجود نہیں ہے۔

براعظموں اور جزیروں پر موجود دریائی،نہری نظام اور پانی کے دوسرے ذخائر میں ہائیڈرو سفیر شامل ہوتے ہیں،جب کے سمندر کے پانی میں نمک شامل ہوتا ہے۔زمین کے زیادہ تر حصے برف سے ڈھکے ہیں ،جس میں براعظم انٹارکٹکا کی ٹھوس برف اور برفیلا سمندری حصہ شامل ہے۔ز

مین کی کشش ثقل خلا میں مختلف عوامل سرانجام دیتی ہے خاص طور پر سورج کے گرد مدار میں گردش کرنا اور چاند کا زمین کے گرد گھومنا. زمین 366.26 بار اپنے محور میں گھوم کر 365.26 شمسی دن مکمل کرتی ہے۔زمین پر مختلف موسموں کی تشکیل اپنے گردشی محور کی سطح میں 23.4° ڈگری جھکاؤ کی وجہ سے ممکن ہوتے ہیں۔

زمین کی گھومنے کی اوسطاً رفتار 29.78 کلومیٹر فی سیکنڈ اور 107200 کلومیٹر فی گھنٹے کی رفتار سے اپنے محور میں چکر کاٹ رہی ہے ایک مکمل چکر کو ہم ایک دن کہتے ہیں جبکہ زمین ہمارے سورج کے مدار میں گردش 365.256363004 دن میں چکر مکمل کرتی ہے جسے ہم سال کہتے ہیں۔

زمین کی پہلی تخلیق تین اہم تہوں میں ہوئی ہے بھوپٹل ، بھوپراوار اور كروڈ کہتے ہیں . اس میں سے بیرونی پرت مائع حالت میں ہے جسے لاوا کہتے ہیں لاوا ایک ٹھوس لوہے اور نکل کی پرت ( inner core ) کے ساتھ عمل کرکے زمین میں مقناطیسیت یا مقناطیسی میدان (Gravity) پیدا کرتا ہے۔

زمین بیرونی خلا (outer space)، میں سورج اور چاند سمیت دیگر اشیاء کے ساتھ عمل کرتا ہے.

زمین اپنے محور کا تقریباً 366.26 بار چکر کاٹتی ہے۔زمین سے سورج تک فاصلہ 149,600,000کلومیٹرہے۔سورج سے زمین تک روشنی پہنچنے میں آٹھ منٹ لگتے ہیں.

زمین سے چاند تک کا فاصلہ 384,000 کلومیٹر ہے۔

زمین کی کشش ثقل 150,000,000 کلومیٹر کے فاصلے تک سورج کی سیاروں تک پہنچنے والی مقناطیسی کشش سے زیادہ طاقتور ہے۔ ہماری زمین ملکی وے کہکشاں کے مرکز سے 28,000 نوری سال کے فاصلے پر ہے

زمین کی اندرونی ساخت تہوں کے صورت میں ہے جیسے پیاز کے چھلکے تہوں کے طور پر ہوتے ہیں. ان تہوں کی موٹائی کیمیائی خصوصیات یا میکانی خصوصیات کی بنیاد پر کیا جا سکتا ہے۔ زمین کی اوپری تہہ ایک ٹھوس پرت ہے۔

زمین کے اوپری حصے کی یہ پرت دار ساخت، زلزلے کی لہرے اسی پرت کی وجہ سے ہوتی ہیں جسے ہم ٹیکٹانکس پلیٹ کہتے ہیں۔ یہ ٹیکٹانکس پلیٹس زمین کے حصوں کو تبدیل کرتی رہتی ہے جس وجہ سے زمین کی شروعاتی تاریخ کے ثبوت تباہ ہو چکے ہے۔