وزیراعظم عمران خان Imran Khan نے فوج کے دباؤ کی اطلاعات مسترد کردیں

November 28, 2020


وزیراعظم عمران خان نے حکومت پر فوج کے دباؤ کی اطلاعات کو مسترد کردیا، عمران خان نے کہا کہ انہیں فوج سے الجھنے کی ضرورت تو اس صورت میں پڑے گی جب وہ کوئی دباؤ ڈالےگی۔

انہوں نے مزید کہا کہ اب تک ایسی ایک چیز بھی نہیں ہوئی ہے کہ انہیں فوج سے الجھنا پڑے، بلکہ میں جو کہتا ہوں فوج وہ بات مانتی ہے۔

نجی ٹی وی کو دیئے گئے انٹرویو کے دوران وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ جنرل ریٹائرڈ عاصم سلیم باجوہ کو سدرن کمانڈ کے تجربے کی وجہ سے چیئرمین سی پیک اتھارٹی لگایا۔

وزیر اعظم نے کہا کہ نواز شریف کو باہر بھیجنے کے لیے بھی ان پر کسی نے دباؤ نہیں ڈالا، نہ ان پر کوئی دباؤ ڈال سکتا ہے۔

عمران خان نے کہا کہ بطور وزیراعظم یہ کہنا ان کا کام نہیں ہے کہ عاصم سلیم باجوہ کلین ہیں۔ جو کچھ ان کے خلاف کہا گیا وہ محض الزامات ہیں، اگر کسی کے پاس کوئی ثبوت ہے تو نیب میں چلا جائے۔

ایک سوال کے جواب میں وزیراعظم نے کہا کہ جن پر کرپشن کے کیسز ہیں یہ سب ہماری حکومت سے پہلے کے ہیں، آصف زرداری اور نوازشریف نے ایک دوسرے پر کیسز بنائے، جب ہم حکومت میں آئے اسحاق ڈار اور نوازشریف کے بیٹے باہر بھاگ چکے تھے، ہماری حکومت میں صرف شہباز شریف پر کیسز بنے ہیں۔