• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

انسٹیٹیوٹ آف بزنس ایڈمنسٹریشن (آئی بی اے)  کے ایگزیکٹیو ڈائریکٹر ڈاکٹر اکبر زیدی کی ہدایت پر  کیمپس میں مخصوص طلبہ کی محفل، نیم برہنہ لباس، رقص و غیر اخلاقی حرکات میں ملوث طالب علم کو ایک سال کے لیے معطل کردیا گیا ہے۔

آئی بی اے سے منسوب پریس اور سوشل میڈیا میں رپورٹ ہونے والی ایک ویڈیو سے متعلق معاملے کی جانچ آئی بی اے اسٹوڈنٹ کنڈکٹ کمیٹی نے کی۔

کمیٹی کے نتائج کے بعد اس معاملے میں ملوث ایک طالب علم کو ایک سال کے لیے معطل کر دیا گیا ہے ۔

دوسرے طالب علم کو آئی بی اے کے احاطے میں داخل ہونے سے روک دیا گیا ہے، طالب علم کو کیمپس تک رسائی، ہاسٹل تک رسائی کو منسوخ کرنے، اور کسی بھی دوسری ادارہ جاتی سہولیات اور خدمات تک رسائی کو روک دیا گیا ہے۔

آئی بی اے انتظامیہ کے مطابق آئی بی اے ایسی کسی بھی سرگرمی کی شدید مذمت کرتا ہے جو ہمارے ادارے کے اصولوں، اخلاقیات، قواعد و ضوابط کے خلاف ہو اور جب بھی آئی بی اے کے ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کی جائے گی تو مناسب کارروائی کرے گی۔

 ایگزیکٹو ڈائریکٹر نے انتظامیہ کو ہدایت کی ہے کہ وہ اس بات کو یقینی بنائیں کہ ہمارے طلباء کے ضابطہ اخلاق پر سختی سے عمل کیا جائے۔

 آئی بی اے کے احاطے میں تمام سماجی اور موسیقی کی تقریبات کو اگلے نوٹس تک روک دیا گیا ہے۔

 ایگزیکٹو ڈائریکٹر نے بورڈ آف گورنرز کا اجلاس بھی بلایا ہے تاکہ بورڈ کے ممبران کو آئی بی اے میں ہونے والی پیش رفت سے آگاہ کیا جا سکے۔

قومی خبریں سے مزید