آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
منگل 15 ؍جمادی الاوّل 1440ھ22؍جنوری 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

بالی ووڈ کےلیجنڈ کامیڈین قادر خان 81 برس کی عمر میں انتقال کرگئے۔


بھارتی فلموں کے معروف اداکار قادر خان طویل عرصہ بیمار تھے اور 16 ہفتوں سے کینیڈا کے شہر ٹورنٹو کے اسپتال میں زیرعلاج تھے۔

قادرخان کوسانس لینےمیں دشواری کاسامنا تھا،گزشتہ روز ان کی حالت تشویشناک ہو گئی جس کے بعدڈاکٹرزنےان کو وینٹی لیٹر پر منتقل کردیا تھا ۔

ان کے صاحبزادے سرفراز خان کا کہنا ہے کہ ہمارا پورا خاندان کینیڈا میں ہے لہٰذا ان کے والد کی آخری رسومات  یہیں ادا کی جائیں گی۔

مزاحیہ اداکار قادر خان 22 اکتوبر 1937 کو کابل میں پیدا ہوئے، انہوں نے 300 سے زیادہ فلموں میں مختلف حیثیت سے کردارادا کیا۔

انہوں نے کامیڈی فلموں کے لیے 9 فلم فیئرایوارڈز حاصل کیے۔

ان کی مشہورفلموں میں مقصد،نیا قدم،آنکھیں،جڑواں،میں کھلاڑی تو اناڑی شامل ہیں۔

واضح رہے قادر خان کی حالت تشویشناک ہونے کے بعد بعض بھارتی ویب سائٹس پر ان کی موت کی خبر پھیل گئی، بعد ازاں ان خبروں کی تردید ان کے بیٹے سرفراز خان نے کی تھی۔

گبر سے بڑا ولن ،امیتابھ سے بڑا مقدر کا سکندر

گبر سے بڑے ولن،امیتابھ سے بڑے مقدر کے سکندر،بالی وڈ کے کنگ آف کامیڈی قادر خان نےچار سو سے زائد فلموں میں اداکاری کے جوہر دکھائے، روٹی، قلی، امر اکبر انتھونی، مسٹر نٹورلال،دواوردو پانچ، مقدر کا سکندر اور ستے پہ ستہ سمیت ڈھائی سو سے زائد شاہکار فلموں کے ڈائیلاگ لکھے۔

قادر خان ویسے تو باپ ،بھائی ولن سائڈ ولن ہر روپ میں نظر آئے،لیکن کامیڈی ان کا خاصہ رہی۔

انہوں نے کئی فلموں کے مکالمے بھی لکھے جن میں امیتابھ کی مشہور فلمیں قلی، امر اکبر انتھونی بھی شامل ہیں۔

2013 میں انہیں فلم انڈسٹری کے لیے خدمات پر ساہتیا شیرومانی ایوارڈ سے نوازا گیا۔اس کے علاوہ تین فلم فیئر ایوارڈز بھی اپنے نام کیے۔


Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں