آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
اتوار30؍جمادی الاوّل 1441ھ 26؍جنوری 2020ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
تازہ ترین
آج کا اخبار
کالمز

’سائبر اینڈ اسپیس: مواقع اور پاکستان کیلئے چیلینجز‘ پر سیمینار

’سائبر اینڈ اسپیس: مواقع اور پاکستان کیلئے چیلینجز‘ پر سیمینار


سینٹر فار ایرو اسپیس اینڈ سیکیورٹی اسٹڈیز (سی اے ایس ایس) نے سرینا ہوٹل اسلام آباد میں ’سائبر اینڈ اسپیس: مواقع اور پاکستان کیلئے چیلینجز‘ کے موضوع پر ایک سیمینار منعقد کیا۔

وفاقی وزیر برائے سائنس و ٹیکنالوجی فواد چوہدری اس موقع پر مہمان خصوصی تھے۔

مہمان خصوصی نے سائبر اسپیس کی اہمیت کو اجاگر کرتے ہوئے کہا کہ یہ جدید زندگی کا ایک ناگزیر پہلو ہے اور آج کی ڈیجیٹل دنیا میں اسپیس ایپلی کیشنز کے ذریعہ فراہم کی جانے والی سائبر ٹیکنالوجی کی خدمات نہ صرف عام شہریوں کی ضروریات بلکہ کسی بھی ریاست کی انتظامی، سماجی، سلامتی اور تجارتی ضروریات کے لیے بھی اہم ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ سائنس اور ٹیکنالوجی کے علم میں مستقل ترقی ہوتی رہتی ہے، لیکن اس کا عملی استعمال کم ہے۔

صدر سینٹر فار ایرو اسپیس اینڈ سیکیورٹی اسٹڈیز  ایئر چیف مارشل (ر) کلیم سعادت نے کہا کہ سائبر وارفیئر بین الاقوامی تعلقات کا ایک جزو ہے جس میں منظم کمپیوٹر نیٹ ورک کے ذریعے ریاستی سطح پر حملے ہوتے ہیں۔

انہوں نے یہ بھی بتایا کہ تمام ممالک خلاء تک رسائی کو اپنا حق سمجھتے ہیں اور نجی شعبے کی شمولیت کی بدولت کم لاگت میں خلا تک رسائی مکمن ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ قومی سطح پر ایسی خامیوں کو ترجیحی طور پر دور کر کے اس بات کو بھی یقینی بنایا جائے کہ پاکستان اس میدان میں پیچھے نہ رہے اور نئی ٹیکنالوجیز کے معاشرتی و معاشی فوائد بھی عام لوگوں کو میسر ہو سکیں۔

چیئرمین اسٹریٹجک پالیسی پلاننگ سیل ڈاکٹر معید یوسف نے کہا کہ سائبر اور اسپیس میں سرمایہ کاری کرنے والے ممالک کی اہلیت ان کی معاشی صلاحیت پر منحصر ہے۔

انہوں نے کہا کہ کس طرح دنیا کے ممالک ایک دوسرے کے ساتھ تعاون کرکے بنی نوع انسان کا سائبر اور اسپیس کے لاحق خطرات سے تحفظ ممکن بنا سکتے ہیں۔

سابق سفیر ضمیر اکرم نے فوجی تناظر میں پاکستا ن کے لیے خلائی قوت کے حصول کو ناگزیر قرار دیا جو مستقبل میں ملکی ترقی کی ضامن ہے۔

چیئرمین سپارکو نے اپنے خطاب میں پاکستان کے خلائی پروگرام کا ایک جائزہ فراہم کیا۔

ائیر مارشل (ر) وسیم الدین نے خلائی پروگرام کی اہمیت اور فوائد کے بارے میں اپنے خیالات بیان کیے۔

دوسرے سیشن میں سائبر کے مختلف پہلوؤں کا احاطہ کیا گیا جس میں مقررین نے سائبر حقائق اور اس کی حیران کن صلاحیتوں کے بارے میں گفتگو کی۔

تقریب میں عام لوگوں کی ایک بڑی تعداد کے علاوہ سینئر حاضر سروس اور ریٹائرڈ عہدیداروں، سفارت کاروں اور ماہرین تعلیم نے بھی شرکت کی۔

قومی خبریں سے مزید