آپ آف لائن ہیں
پیر3؍صفر المظفّر 1442ھ 21؍ستمبر 2020ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

پھیپھڑے باکس میں رکھ کر گھومنے والی خاتون

لندن ( جنگ نیوز) برطانیہ کی 24 سالہ خاتون کی زندگی کو ڈاکٹرز نے محفوظ بنا دیا وہ خاتون اب ایک باکس میں محفوظ پھیپھڑوں کی مدد سے سانس لیتی ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق 24سالہ خاتون شائنسی کے پھپھڑے ایک بیماری کی وجہ سے ختم ہوگئے تھے اور ڈاکٹروں نے اُن کی زندگی بچانے کیلئے رات دن کاوشیں کیں اور وہ اس میں کامیاب بھی ہو گئے۔

ڈاکٹروں نے ٹرانسپلانٹ کر کے ’اوسی ایس‘ باکس میں‌ رکھے ہوئے پھپھڑوں کی مدد سے اسے مصنوعی طریقے سے آکسیجن فراہم کی۔

ان کا ٹرانسپلانٹ کا یہ تجربہ کامیاب رہا اور شائنسی اب ان ہی پھیپھڑوں کی مدد سے سانس لے رہی ہیں۔

خاتون کا کہنا تھا کہ وہ اس سے قبل چار اسپتالوں کا چکر لگا چکی تھی جہاں ڈاکٹروں نے اسے جواب دے دیا تھا۔ بعد ازاں وہ ماریوس برمن نامی سرجن کے پاس نومبر 2018 میں پہنچی تو انہوں نے اسے کچھ امید دلوائی ۔

ڈاکٹر نے بتایا کہ اُن کے پاس 48 سالہ شخص کے عطیہ کردہ پھپھڑے او سی ایس باکس میں موجود ہیں جو اس کیلئے بہت زیادہ کارآمد ہو سکتے ہیں۔میڈیکل ٹیم نے ٹرانسپلانٹ کے حوالے سے خاتون کے کئی ٹیسٹ کیے اور اپریل 2018 میں خاتون کا پہلا آپریشن کیا گیا، بعد ازاں اُن کی نومبر میں شادی ہو گئی جس کے بعد اس کا کامیاب ٹرانسپلانٹ کیا گیا۔

خاتون کا کہنا تھا کہ وہ اپنے پھیپھڑوں کو لنگس باکس میں ساتھ لے کر ہر جگہ گھومتی ہے کیونکہ اس کے سانس لینے کیلئے یہ باکس بہت ضروری ہے اور زندگی کا واحد انحصار اسی پر ہے ۔

اس کا کہنا ہےکہ میں دیگر عام لوگوں کی طرح مضبوط تو نہیں مگر اس بات پر بہت خوش ہوں کہ میں زندہ ہوں اور زندگی کو انجوائے کر رہی ہوں ۔

یورپ سے سے مزید