آپ آف لائن ہیں
جمعرات13؍ صفر المظفّر 1442ھ یکم اکتوبر2020ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

پڑوسیوں کا ایک دوسرے سے گھی ٹماٹر وغیرہ منگوانا

آپ کے مسائل اور اُن کا حل

سوال:۔عموماً پڑوس میں لوگ ایک دوسرے سے پیاز ٹماٹر وغیرہ قرض لیتے ہیں اور پھر بعد میں واپس کردیتے ہیں۔ دیہات میں لوگ گھی قرض لیتے ہیں، بلکہ فوری ضرورت ہوتو کوئی بھی چیز پڑوس سے منگوالیتے ہیں اور پھر مناسب موقع پر لوٹا دیتے ہیں۔ میں نے پڑھا ہے کہ جو اشیاء ناپ تول کر فروخت ہوتی ہیں ،ان میں ادھار جائز نہیں ہے تو کیا پڑوس کے یہ معاملات شریعتِ اسلامی کی رو سے ناجائز ہیں؟

جواب:۔جن چیزوں کا ادھارلین دین سود ہونے کی وجہ سے ناجائز ہے، ان چیزوں کا قرض کے طور پر لینا دینا جائز ہے، جیسے روپے یا سونا قرض کے طور پر لینا جائز ہے۔ پڑوس کے یہ معاملات بھی قرض کے طور پرہوتے ہیں اس لیے جائز ہیں ۔

اپنے دینی اور شرعی مسائل کے حل کے لیے ای میل کریں۔

masail@janggroup.com.pk

اقراء سے مزید