آپ آف لائن ہیں
جمعہ18؍ربیع الثانی 1442ھ 4؍دسمبر2020ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

محکمۂ صحت سندھ کی طیارہ حادثہ رپورٹ تیار

محکمۂ صحت سندھ نے گزشتہ روز کراچی میں پیش آنے والے طیارہ حادثے کی رپورٹ تیار کرلی۔

محکمۂ صحت سندھ کی رپورٹ کے مطابق طیارہ حادثے میں 97 افراد جاں بحق ہوئے جن میں سے 2 افراد معجزانہ طور پر زندہ بچ گئے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ حادثے کے بعد 66 میتیں جناح اور 31 سول اسپتال پہنچائی گئیں، ایک زخمی سول اور دوسرا دارالصحت اسپتال میں زیرِعلاج ہے۔

محکمۂ صحت سندھ کی رپورٹ کے مطابق اب تک 97 میتوں کے ڈی این اے کے نمونے لیے جا چکے ہیں، 66 افراد کے جناح اور 31 کے سول اسپتال میں ڈی این اے سیمپل لیے گئے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ جاں بحق ہونے والوں میں میں 26 خواتین، 68 مرد اور 3 بچے شامل ہیں، تمام 97 میتوں کے پوسٹ مارٹم بھی مکمل کر لیے گئے ہیں۔

محکمۂ صحت سندھ کی رپورٹ میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ جامعہ کراچی میں اب تک 40 لواحقین کے ڈی این اے کے نمونے لیے جا چکے ہیں۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز دوپہر کو لاہور سے کراچی آنے والی قومی فضائی ادارے (پی آئی اے) کی پرواز کراچی میں لینڈنگ سے 30 سیکنڈ قبل حادثے کا شکار ہوگئی تھی۔

ایوی ایشن ذرائع کے مطابق پی آئی اے کی پرواز پی کے 8303 نے دوپہر 2 بج کر 40 منٹ پر جناح انٹرنیشنل ایئر پورٹ پر لینڈ کرنا تھا۔

یہ بھی پڑھیئے: طیارہ حادثہ، انویسٹی گیشن بورڈ قائم

طیارہ لینڈنگ اپروچ پر تھا کہ کراچی ایئر پورٹ کے جناح ٹرمینل سے محض چند کلومیٹر پہلے ملیر ماڈل کالونی کے قریب جناح گارڈن کی آبادی پر گر گیا۔

حادثے کے بعد جہاز میں آگ لگ گئی جس نے قریبی آبادی کو بھی لپیٹ میں لے لیا، جبکہ طیارے کے مختلف حصے ٹوٹ کر آبادی میں بکھر گئے جنہوں نے مکانات کو نقصان پہنچایا تھا۔

طیارے میں سوار 97 افراد کی لاشیں نکال لی گئیں جبکہ 2 مسافر اس حادثے میں محفوظ رہے۔

پاک فوج، رینجرز، پولیس، سول ایوی ایشن، فائر بریگیڈ اور دیگر اداروں کی جانب سے امدادی کارروائیاں کی گئیں۔

قومی خبریں سے مزید