آپ آف لائن ہیں
ہفتہ8؍ صفر المظفّر 1442ھ 26؍ستمبر 2020ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

وزیرِاعلیٰ اور گورنر سندھ کی مزارِ قائد پر حاضری

مراد علی شاہ نے مزارِ قائد آمد پر گورنر سندھ عمران اسماعیل کا استقبال کیا


پاکستان بھر میں آج 73 واں جشنِ آزادی منایا جا رہا ہے، اس موقع پر وزیرِ اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ اور گورنر سندھ عمران اسماعیل نے کراچی میں بانیٔ پاکستان قائدِ اعظم محمد علی جناح کے مزار پر حاضری دی۔

وزیرِ اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے مزارِ قائد آمد پر گورنر سندھ عمران اسماعیل کا استقبال کیا اور ان سے مصافحہ کیا۔

وزیرِ اعلیٰ اور گورنر سندھ نے مزارِ قائد پر حاضری دی، فاتحہ خوانی کی، پھولوں کی چادر رکھی اور اس موقع پر ملک کی سلامتی، ترقی اور خوش حالی کے لیے دعا بھی کی۔

وزیرِ اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے مزارِ قائد پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ظلم اور کورونا روائرس کی وباء کی وجہ سے کشمیری پاکستان کی آزادی کی تقریب سادگی سے منا رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ سندھ نے کورونا وائرس سے متعلق پورے ملک کی رہنمائی کی ہے، سندھ میں ٹیسٹنگ پورے پاکستان میں سب سے زیادہ ہے۔

وزیرِ اعلیٰ سندھ کا کہنا ہے کہ کورونا کی وباء ابھی ختم نہیں ہوئی ہے، ہمیں احتیاط کرنی ہے، ہم شاید سپریم کورٹ کو اپنے اقدامات کے بارے میں صحیح بات بتا نہیں سکے۔

یہ بھی پڑھیئے: گورنر سندھ اور وزیر اعلیٰ کی مزار قائد پر حاضری

انہوں نے بتایا کہ 2009ء میں 125 ملی میٹر بارش ہوئی تو شارعِ فیصل پر 3 دن پانی جمع رہا تھا، اس مرتبہ 4 گھنٹے بھی بارش کا پانی نہیں رُکا۔

مراد علی شاہ کا مزید کہنا ہے کہ ضلع وسطی میں ویسٹ مینجمنٹ کام نہیں کر رہا، ضلع وسطی میں ڈی ایم سی خود صفائی کرتی ہے۔

وزیرِ اعلیٰ سندھ کا یہ بھی کہنا ہے کہ ہم 38 نالوں کا سروے کر کے صفائی کر رہے ہیں، نالے صاف ہو جائیں گے تو مسائل حل ہوں گے۔

قومی خبریں سے مزید