آپ آف لائن ہیں
پیر3؍صفر المظفّر 1442ھ 21؍ستمبر 2020ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

زرداری کیخلاف 3 ضمنی ریفرنس چلیں گے یا نہیں فیصلہ کل ہوگا


احتساب عدالت نے آصف علی زرداری کی تین مقدمات میں ضمنی ریفرنس خارج کرنےکی درخواست پر فیصلہ محفوظ کرلیا، پارک لین،منی لانڈرنگ اور ٹھٹھہ واٹرسپلائی ریفرنس چلیں گے یا نہیں فیصلہ کل سنایا جائیگا، نیب نے زرداری کی تمام درخواستیں خارج کرنے کی استدعا کردی۔

اسلام آباد کی احتساب عدالت کے جج اعظم خان نے سابق صدر آصف زرداری کی 3 ضمنی ریفرنس خارج کرنے کی درخواستوں پر سماعت کی،عدالت نے آصف زرداری کی آج حاضری سے استثنا کی درخواست منظور کی ان کی جانب سے وکیل فاروق ایچ نائیک نے عدالت میں دلائل دیئے۔

وکیل فاروق نائیک نے مؤقف اپنایا کہ پہلے ادھورا اور پھر مکمل چالان فوجداری مقدمات میں جمع ہوتا ہے، نیب آرڈیننس میں پہلےادھورا اورپھر مکمل چالان جمع کرانے کی گنجائش نہیں، ضمنی ریفرنس صرف نیب کی بدنیتی ہے اور اس کی کوئی قانونی حیثیت نہیں۔

انہوں نےکہا کہ عدالت کو ریفرنس کے قابل سماعت ہونے کی وجوہات بھی بتانا ہوتی ہیں، اس عدالت نے ضمنی ریفرنس کے قابل سماعت ہونے کا کوئی آرڈر جاری نہیں کیا لہٰذا عدالت ضمنی ریفرنس میں آصف زرداری کی طلبی کا نوٹس واپس لے۔

جج اعظم خان نے فاروق نائیک سے استفسار کیا کہ آپ جو کہہ رہے ہیں اس کی کوئی عدالتی نظیریں بتائیں جس پر سابق صدر کے وکیل نے کہا کہ مجھے تھوڑا وقت دیں میں عدالتی نظیریں بھی آج پیش کروں گا،آج کل اسمبلی سیشن رات دیر تک چلتے ہیں صبح اٹھنا بھی مشکل ہوتا ہے۔

انہوں نے عدالت کو بتایا کہ اعلیٰ عدالتوں نے کئی مقدمات میں اصول طے کر رکھے ہیں،عدالت نےضمنی ریفرنس کو قابل سماعت سمجھا تواس کا اسپیکنگ آرڈر ضروری تھا۔

وکیل فاروق نائیک کے دلائل مکمل ہونے کے بعد نیب کے ڈپٹی پراسیکیوٹر جنرل نیب سردار مظفر عباسی نے دلائل دیئے اور آصف زرداری کی تمام درخواستیں خارج کرنے کی استدعا کی۔

مظفر عباسی نے اپنے دلائل میں کہا کہ کہیں پرکسی قانون میں نہیں لکھا کہ ضمنی ریفرنس دائر نہیں ہو سکتا، فاروق نائیک نےایک بھی قانون کا حوالہ نہیں دیا جس میں ایسا لکھا ہو، سیکشن 16 کے مطابق ایک کیس کسی دوسری جگہ منتقل بھی ہوسکتا ہے۔

سردار مظفر نےکہا کہ عدالت جو طلبی کے نوٹس جاری کرتی ہے وہ عدالت کا آرڈر ہی ہوتا ہے، طلبی کےنوٹس کا مطلب ہوتا ہےکہ کیس کو عدالت نے قابل سماعت سمجھ لیاہے۔

عدالت نے دونوں فریقین کے دلائل سننے کے بعد آصف زرداری کی 3 مقدمات میں ضمنی ریفرنس خارج کرنےکی درخواست پر فیصلہ محفوظ کرلیا جو کل سنایا جائے گا۔

قومی خبریں سے مزید