آپ آف لائن ہیں
پیر 8؍ ربیع الاوّل1442ھ 26؍اکتوبر2020ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

آپ کے مسائل اور اُن کا حل

سوال :۔کینہ کیاہے؟ اکثر ہم سنتے ہیں کہ کینہ نہیں رکھنا چاہیے یا فلاں شخص دل میں کینہ رکھتا ہے؟

جواب:۔کینہ کے بارے میں حکیم الامت حضرت مولانا اشرف علی تھانوی رحمہ اللہ فرماتے ہیں: کینہ وہ ہے جو اختیار وقصد سے کسی کی برائی اور بد خواہی دل میں رکھی جائے اور اس کو ایذاء پہنچانے کی تدبیر بھی کرے۔ (انفاس عیسی ص: ۱۷۴)حضرت تھانوی علیہ الرحمہ کی تعلیم الدین نامی کتاب میں ہے کہ کینہ کو عربی میں حقد کہتے ہیں، اس کی حقیقت یہ ارشاد فرمائی گئی ہے کہ جب کسی آدمی کو غصے میں اپنے دشمن سے بدلہ لینے کی قدرت نہیں ہوتی تو اس کے ضبط کرنے سے اس شخص کی طرف سے دل میں ایک قسم کی گرانی ہو جاتی ہے، اسے حقد یعنی کینہ کہتے ہیں، بس اس کا علاج یہ ہے کہ اس شخص کا قصور معاف کر کے اس سے میل جول وتعلقات شروع کرے گو تکلیف سہی چند روزمیں کینہ دل سے نکل جائے گا۔ (تعلیم الدین از مولانا تھانوی رحمہ اللہ ص:۵۸)

اقراء سے مزید