• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

خواتین ملکی آبادی کا نصف‘نظرانداز نہیں کیا جاسکتا‘سینیٹر ثمینہ

کوئٹہ (پ ر) خواتین پاکستان کی نصف آبادی ہیں جنہیں کسی صورت نظر انداز نہیں کیا جاسکتا، معاشرے کی ترقی میں خواتین کا اہم کردار ہے اور کوئی بھی معاشرہ خواتین کی شرکت کے بغیرترقی نہیں کر سکتا۔ پاکستان کی نصف آبادی کی فلاح و بہبود اور ترقی کے لئے مواقع فراہم کرنا ناگزیر ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوںنے خواتین کے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ ہنر مند اور خود مختار خواتین معاشرے میں اہم کردار ادا کر سکتی ہیں اوراس کی تعمیر و ترقی میں خواتین کے مثبت اور تعمیری کردار سے انکار نہیں کیا جاسکتا۔ خواتین کو بااختیار بنانے اور تحفظ کے لئے حکومت وزیراعلیٰ جام کمال خان کی قیادت میں کئی منصوبوں پر عمل پیرا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بلوچستان کے دور دراز اور پسماندہ علاقوں میں خواتین کے حقوق کے تحفظ اور ان کو ہنرمند و بااختیار بنانے کے لئے ٹیکنیکل اور ووکیشنل سینٹرز کا قیام عمل میں لایا گیا ہے‘ جہاںخواتین کی بہت بڑی تعداد ہنر حاصل کر رہی ہے جبکہ بہت سے علاقوں میں ایسے ووکیشنل ٹریننگ سینٹرز کے قیام کے لئے کام جاری ہے تاکہ بلوچستان کی خواتین مختلف شعبوں میں مہارت حاصل کر کے اپنے خاندان کی کفالت میں ہاتھ بٹا نے کے ساتھ معاشرے کی ترقی میں اہم کردار ادا کر سکیں ۔بلوچستان کی خواتین ہر شعبے میں آگے بڑھ رہی ہیں،آج کی خواتین جدید دور کے چیلنجز کا مقابلہ کرنے کی بھرپور صلاحیت رکھتی ہیں اس سلسلے میں فنی صلاحیت رکھنے والی خواتین کو روزگار کے مواقع فراہمی کے لئے مواقع فراہم کرنا ضروری ہے ۔صوبائی حکومت ہنر مند خواتین کو اپنا کاروبار کرنے کے لئے بلا سود قرضوں کی فراہمی کے لئے بھی کوشاں ہے تاکہ خواتین ہر شعبے میں ٹریننگ حاصل کر کے بلوچستان کی ترقی میں اپنا بھرپور کردار ادا کر سکیں ۔
کوئٹہ سے مزید