Ghazi Salahuddin - Urdu Columns Pakistan | Jang Columns
| |
Home Page
جمعرات 25 ربیع الاوّل 1439ھ 14 دسمبر2017ء
غازی صلاح الدین
خواب اور عذاب
November 25, 2017
ریاست کا سر جھکا ہوا ہے

فیض آباد انٹر چینج کے کشادہ اسٹیج پر پیش کی جانے والی جس تمثیل کو ہم دیکھتے رہے ہیں اس پر بے لاگ تبصرہ ممکن ہی نہیں۔ ہم جس ماحول میں رہ رہے ہیں اس میں بہت سی باتیں کہی نہیں جا سکتیں۔ ایسے معاملات پر جب بات ہو تو میرا عذریہ ہوتا ہے کہ میں تو میثاق خاموشی پر دستخط کر چکا ہوں۔ ہاں، جو بات کسی اور نے کہی ہو اور جسے میڈیا نے قبول کیا ہو اس...
November 18, 2017
یہ کراچی میں کیا ہو رہا ہے

اس کالم کا عنوان آپ سے کیا کہہ رہا ہے؟ اگر آپ عوام میڈیا کا نشہ کرتے ہیں تو آپ کا اندازہ یہ ہوگا کہ میں کراچی کے سیاسی دنگل کی بات کروں گا۔ اس شہر کی ملکیت پر ایک نیا تنازعہ کھڑا ہوگیا ہے۔ ایسا لگتا ہے کہ جیسے یہ کسی جائیداد کے بٹوارے کا معاملہ ہے۔ کس کو کیا ملے گا اس کا فیصلہ شاید ان قوتوں کے ہاتھوں میں ہے۔ جنہیں ہم اسٹیبلشمنٹ کا...
November 11, 2017
دولت کی آلودہ دھند

میں نے ایک مقولہ کہیں پڑھا تھا جس کے خیال کو مستعار لے کر میں کہتا ہوں کہ پاکستان ایک ایسی جگہ ہے کہ جہاں دولت حاصل کرنا شاید اتنا دشوار نہیں کہ جتنا روزی کمانا۔ میں نے دولت کمانا نہیں کہا کیونکہ اس کا باقاعدہ حساب ہونا چاہئے کہ آمدنی کے قانونی ذرائع کیا تھے۔ کس نے کیا کمال کیا کہ اس کی جھولی بھر گئی۔ مہذب ملکوں کے ارب پتی یہ بتا...
November 04, 2017
زباں پہ مہر لگی ہے

ضیاء الحق کے زمانے اور سنسر شپ کے دنوں میں اگر کوئی مجھ سے یہ پوچھتا کہ بتائیں، ملک میں کیا ہورہا ہے تو میرا ایک جواب یہ ہوتا تھا کہ مجھے کیا معلوم، میں تو ایک اخبار میں کام کرتا ہوں۔ تب آپ یاد کریں، ٹیلی وژن اور ریڈیو پر سرکار کا قبضہ تھا اور اسمارٹ فون یا سوشل میڈیا کے جادو کا تصور بھی ممکن نہ تھا۔ آج کی صورت حال بالکل مختلف ہے۔ اب...
October 21, 2017
درباں کاعصایا مصنف کاقلم؟

بات کہاں سے شروع ہوئی تھی آپ کو یاد ہونا چاہئے۔ 11اکتوبرکوفوج کے سربراہ جنرل قمرجاویدباجوہ نے کراچی میں معیشت اورسلامتی کے موضوع پر ایک سیمینار سے خطاب کیا۔ظاہرہے کہ یہ ایک سوچی سمجھی تقریرتھی بلکہ سیمینار کاکلیدی خطبہ تھا۔جوسرخیاں لگیں ان کی گونج اب بھی سنی جاسکتی ہے۔بنیادی نکتہ یہ تھاکہ آج کی دنیا میں سلامتی اورمعیشت ایک...
October 14, 2017
پاکستان کی ذہنی صحت

اگر آپ افسانوی ادب کی طلسماتی حقیقت نگاری سے واقف ہیں اور آپ نے داستانوں کی جادونگری میں سفر کیا ہے تو پھر آپ شاید اس منظر کو قبول کرلیں جو میں پیش کرناچاہتا ہوں۔ سوچئے کہ جیسے کسی ماہر نفسیات کا مطب ہے جس میں ایک مریض صوفے جیسے بستر پر نیم دراز ہے۔ وہ آنکھیں موندے اپنی کہانی بیان کررہا ہے اور قریب کی کرسی پر بیٹھا ڈاکٹر اس کی...
October 07, 2017
آپ کیا کرتے ہیں،جناب عالی؟

ایک چھوٹی سی محفل میں جب میں نے ایک خاص موضوع پر نواز شریف کے موجودہ موقف کی حمایت میں کچھ کہنا شروع کیا تو کسی نے میری بات کاٹ دی ۔ بولے تم یہ کیسے کہہ سکتے ہو۔ہمیشہ توتم نے نواز شریف کی سیاست کی مخالفت کی ہے۔ انہیں دائیں بازو کے قدامت پرستوں کاحامی سمجھا ہے۔ اور اب تم ان کا ساتھ دینا چاہتے ہو۔ تب مجھےکینزسے منسوب ایک واقعہ یاد...
September 30, 2017
موسم بدل رہا ہے

سن ساٹھ کی دہائی میں کہ جب مغربی ملکوں اور کسی حد تک پاکستان جیسے ملکوں میں بھی نوجوانوں نے بغاوت کا علم بلند کیا تھا تب ایک امریکی گلوکار کے گائے ہوئے ایک گیت یا نغمے کو بہت شہرت حاصل ہوئی تھی۔ وہ گلوکار بوب ڈائلن تھے۔ بلکہ ہیں کیونکہ پچھلے سال ہی انہیں ادب کے نوبل انعام سے نوازا گیا ہے۔ وہ اپنے گیت خود لکھتے رہے ہیں۔ یعنی انہیں ایک...
September 23, 2017
جو ہاتھی سامنے کھڑا ہے

پہلے ایک قدیم حکایت جو آپ کے حافظے میں کہیں موجود ہو گی۔ چند نابینا افراد نے مل کر ایک ہاتھی کی حقیقت کو سمجھنے کی کوشش کی۔ یہ کام وہ اسے چھو کر اورٹٹو ل کر ہی کر سکتے تھے۔ سو ایک نے ہاتھی کے درمیانی جسم پر ہاتھ رکھ کر کہا کہ ارے، یہ تو ایک دیوار کی مانند ہے۔ دوسرے نے ہاتھی کے دکھائی دینے والے دانت کی نوک کو چھوا تو کہا یہ تو ایک نیزہ...
September 16, 2017
دھند میں لپٹا میدان کارزار

اگر کوئی تصویر یا تصویری ڈیزائن ایک کالم کا عنوان بن سکتا تو آج کے کالم کے لئے میرے پاس ایک پوسٹر موجود ہے۔ اس پر میری نظر این اے 120کے حلقے میں لاہور میں پڑی۔میں تو کراچی کا گرفتار ہوں لیکن اتوار اور پیر کی درمیانی رات لاہور میں گزری جہاں میں ایک میٹنگ میں شرکت کے لئے گیا تھا۔ اتوار کی شام کافی دیر تک اس علاقے میں تنہا ٹہلتا رہا کہ...
September 09, 2017
وقت کی پاگل آندھی

سنانے کے لئے کئی کہانیاں ہیں۔ اپنی بھی اور دنیا کی بھی جو سلگتی ہوئی سرخیوں کی لپیٹ میں ہے۔ لیکن اس وقت ایک عجیب کیفیت سوچ اور اظہار کو کند کئے دے رہی ہے۔ ایک ہفتہ بھی نہیں ہوا کہ میں امریکہ میں پورے ایک مہینے کی چھٹیاں گزار کر واپس آیا ہوں۔میںنے کہا نا کہ سنانے کو بہت کچھ ہے تو یہ سچ ہے۔ سر فہرست مکمل سورج گرہن دیکھنے کا اچھوتا...
August 19, 2017
جب دن میں تارے چمکیں گے

محاورے کی بات اور ہے لیکن میں سچ مچ دن میں تارے دیکھنے والا ہوں۔ اور 21اگست یعنی پیر کے دن اس جیون میں ایک بار تسم کے تجربے کے لئے لاکھوں امریکی بے چین ہیں۔ ظاہر ہے کہ میں اس مکمل سورج گرہن کی بات کر رہا ہوں۔ جو اس دفعہ صرف امریکہ میں دیکھا جائے گا۔ آپ اس آسمانی معجزے کے بارے میں کافی کچھ جانتے ہوں گے کیونکہ میڈیا میں ایک عرصے سے اس...
August 12, 2017
تاریخ کے آئینے میں ننکانہ صاحب کی ملازمہ

یہ بات بتانا شاید بالکل ضروری نہیں کہ میں ان دنوں پاکستان سے پوری آدھی دنیا دور ، ایک یادگار قسم کی چھٹیاں منارہا ہوں۔ وقت کا فاصلہ بھی 12گھنٹے کا ہے۔ یعنی جو کچھ میں چار ہفتوں کے اس وقفے میں لکھوں اس پر اس دوری کا سایہ پڑتا رہے گا۔ اور اگر نہ لکھ سکوں تو یہ بات بھی سمجھ میں آنے والی ہے۔ دور کی دنیائوں سے اب ہمارا رشتہ ، ذاتی اور...
August 05, 2017
تمام عمر کا حساب

اگست کا مہینہ شروع ہوا تو جیسے پاکستان کی آزادی کے ستر سالہ جشن کا طبل بجنے لگا۔ یہ احساس کہ ہم اپنے اس سفر میں ایک اہم سنگ میل کوچھو رہے ہیں ایک عرصے سے تھا۔ نئی کتابیں لکھی گئی ہیں۔ نئے تجزیے کئے جارہے ہیں۔ کیونکہ پاکستان اور انڈیانے اپنی آزادی کا سفر ایک ساتھ شروع کیاتھا اس لئے عالمی میڈیا اس تقریب کو ایک اور تناظر میں بھی دیکھ...