Wajahat Masood - Urdu Columns Pakistan | Jang Columns
| |
Home Page
بدھ 30 ذیقعدہ 1438ھ 23 اگست 2017ء
وجا ہت مسعود
تیشہ نظر
August 22, 2017
تحصیل دار کے غوطے اور زرداری صاحب کی دانش

محترم آصف علی زرداری نے بالآخر لب کشائی فرمائی۔ پرویز رشید نے اپنا موقف دیا ہے۔ چوہدری نثار تاشقند معاہدے کا راز افشا کرنے میں تذبذب کا شکار ہیں۔ اگرچہ پہلی بات ہی آخری تھی۔ جب یہ سطریں آپ تک پہنچیں گی، ٹرمپ صاحب افغان پالیسی کا اعلان کر چکے ہوں گے۔ ادبار کے ان بادلوں کو ایک کالم کے جام سفال میں کشید کرنا مشکل ہے۔ مناسب یہ ہے کہ...
August 19, 2017
میری بھینس کو ڈنڈا کیوں مارا؟

ماہ اگست کا آخری حصہ آن لگا۔ 32 نکلسن روڈ اور نواب زادہ نصراللہ خان یاد آ رہے ہیں۔ 27 ستمبر کو نوابزادہ صاحب کو رخصت ہوئے چودہ برس مکمل ہو جائیں گے۔ لفظ کی اپنی ایک کیفیت ہوتی ہے جو حالات اور واقعات کے تناظر میں متعین ہوتی ہے۔ نواب اور نواب زادہ کے الفاظ ہماری زبان میں پامال ہو کر رہ گئے ہیں لیکن نواب زادہ کا سابقہ نصراللہ خان اور...
August 17, 2017
شیر خان سے اختلاف کی حقیقی وجہ

محترم شیر خان صاحب سے تعلق کو کیسے بیان کیا جائے۔ یوں سمجھئے، اونٹ کے گلے میں بلی بندھی ہے۔ 19 برس سے گاڑی چلا رہے ہیں اور عاجز ان کی معیت کا گناہگار ہے۔ کامنی بیٹی کو پہلے روز اسکول چھوڑنے گئے تھے۔ کامنی تعلیم کی منزلیں طے کرتی کہیں سے کہیں نکل گئی ہے، شیر خان اور ان کے ہمراہی کے بال پورے سفید تو نہیں ہو پائے، خاکستری ضرور ہو گئے ہیں۔...
August 15, 2017
نواز شریف کا امتحان اور قوم کی آزمائش

نواز شریف کا قافلہ بالآخر اسلام آباد سے لاہور پہنچ گیا۔ ساٹھ برس پہلے عبدالقیوم خان نے پنڈی سے جہلم تک بتیس میل لمبا جلوس نکالا تھا۔ نواز شریف اور ان کے حامیوں نے اسی راستے پر تین سو کلومیٹر لمبا جلوس نکال کر انتظامی اہلیت، عوامی مقبولیت، رہنما کی ہمت، رفقا کی استقامت اور حامیوں کے والہانہ پن کا نیا پیمانہ تخلیق کر دیا۔ ایک...
August 12, 2017
نکالے ہوئے، پھینکے ہوئے لوگوں کی عید غریباں

ہمارا باپ ایک نیک شخص تھا۔ زندگی بھر بچوں کی بہتری کے لئے دن رات کام کرتا رہا یہاں تک کہ صحت جواب دے گئی۔ اس حالت میں اپنے بچوں کے مستقبل کے لئے مقدمہ لڑا، ڈاکٹر ہمارے باپ کی صحت سے مایوس تھے۔ مگر وہ عظیم شخص اپنی صحت کی خرابی کا ذکر نہیں کرتا تھا۔ بالآخر ہمارے باپ نے مقدمہ جیت لیا اور اپنا کل اثاثہ بچوں کے سپرد کر دیا۔ اس روز ہمارے...
August 10, 2017
ہوا کا دباؤ اور دباؤ کی دیگر اقسام

اسکول کے ابتدائی درجوں میں سائنس اور ریاضی کے نام پر جو پڑھایا گیا، بالکل یاد نہیں۔ اساتذہ بہت اچھے اور شفیق تھے۔ مشکل یہ تھی کہ وہ خود سائنس اور ریاضی سے نابلد تھے۔ کتاب میں جو لکھا تھا، اسے بار بار دہرانے اور حفظ کروانے کی کوشش کی جاتی تھی۔ ایک جگہ ریاضی کی کتاب میں لکھا تھا، صفر کا تیسرا استعمال۔ قسم لے لیجیے جو آج تک معلوم ہو...
August 08, 2017
اپنی غلطی کا اعتراف

برادر عزیز حامد میر نے آج مورخہ (7اگست 2017ء) روزنامہ جنگ میں ایک مضبوط اور مربوط کالم لکھا ہے جس میں ان دانشوروں اور کالم نگاروں سے اپنی غلطی کے اعتراف کا مطالبہ کیا ہے جنہوں نے 2014میں جنرل (ریٹائرڈ) پرویز مشرف کو ملک سے باہر بھیجنے کی حمایت کی تھی۔ مجھے دانشور ہونے کا وہم قطعی نہیں۔ خود کو قلم گھسیٹ کالم نویس سمجھتا اور کہتا ہوں۔...
August 05, 2017
ہنا جھیل، شہید وکیلوں کی مائیں اور پنچایت کا انصاف

میں پہلی بار چالیس برس پیشتر کوئٹہ آیا تھا۔ کوئٹہ کے بازار اور عمارتیں حافظے پر نقش ہیں۔ ایک منظر کوئٹہ سے کوئی سات آٹھ میل دور، ٹھہرے ہوئے گہرے پانی کا ہے جس کے بیچوں بیچ ایک ٹاپو تھا۔ اسے ہنا جھیل کہتے تھے۔ بتایا گیا ہے کہ اب اس مقام پر ایک وسیع و عریض خشک میدان ہے۔ کوئی گرد و غبار کی دیوار کے پار جانے کی ہمت کرے تو خشک مٹی سے بنے...
August 01, 2017
راجہ صاحب ظفر محمود کا گھر ڈھونڈتے ہیں

قبلہ گاہی ظفر محمود کی قدم بوسی ایک مدت سے واجب تھی۔ خیال تھا کہ آج شام پیر و مرشد کی زیارت کی جائے۔ بارش کے بعد زمیں ابھی کسی قدر گیلی تھی۔ لاہور میں بارش اور اس کے متعلقات ایک نعمت کی شکل اختیار کر گئے ہیں۔ چھینٹا پڑتا ہے تو باراں کی خوشی سے زیادہ یہ احساس دل کو آ لیتا ہے کہ بھٹکا ہوا بادل ادھر آ نکلا ہے، دو گھڑی برس کے غائب ہو...
July 29, 2017
خاموش! عدالت جاری ہے

1995 کا موسم سرما تھا۔ بے نظیر بھٹو کی حکومت ڈانواں ڈول تھی۔ اخبارات میں کرپشن کی کہانیاں چھپ رہی تھیں۔ شاہد حامد اور بیگم عابدہ حسین کے لب و لہجے کے ہر زیر و بم پر سیاسی منڈی میں بھاؤ چڑھتے اور گرتے تھے۔ 1993ء میں نااہل قرار پانے والے میاں نواز شریف دیانت دار اور شفاف ہو چکے تھے۔ 58 ٹو-بی کی مدد سے بے نظیر حکومت گرانے اور مسلم لیگ نواز...
July 27, 2017
دہشت اور فیصلے کا انتظار

پانامہ کی تمثیل اپنے آخری مراحل میں ہے۔ جو حقائق معلوم کیے جا سکتے تھے، کر لئے گئے۔ جو دلائل دئیے جا سکتے تھے، دے دئیے گئے۔ اس مرحلے پر کرپشن اور احتساب کی پندرہ مہینے پر محیط جگل بندی کو دہرانے سے کچھ حاصل نہیں۔ قیاس آرائیوں سے بہتر ہے کہ عدالت کے فیصلے کا انتظار کیا جائے… پہلے بھی تو گزرے ہیں دور نارسائی کے،بے ریا خدائی کے… اس...
July 25, 2017
سید مودودی، فیض اور حسن عسکری کیوں یاد آئے؟

گولڈی نائیجیریا سے آیا تھا۔ انگریزی ادب میں ڈاکٹریٹ کر رہا تھا۔ ہماری دوستی ہو گئی۔ گولڈی کے وظیفے کی رقم پہنچنے میں تاخیر ہو رہی تھی۔ وہ ایک سنجیدہ طالبعلم تھا اور تعلیم میں رخنہ آنے کا خیال ہی اس کے لئے جاں گسل تھا۔ اپنا قصہ یہ تھا کہ کل بائیس سو پاؤنڈ کی خطیر رقم موجود تھی جسے جراب میں لپیٹ کے دراز میں رکھ چھوڑا تھا۔ آئندہ...
July 19, 2017
نواز حکومت اور میثاقِ جمہوریت کا وقت ابھی ختم نہیں ہوا

معروف ماہر معیشت غلام کبریا نے2001میں ایک دلچسپ ، مدلل اور چشم کشا کتاب لکھی۔ اصل کتاب انگریزی میں تھی ( Pre-Independence Indian Muslim Mindset) حسن عابدی نے ترجمہ کیا، ’’آزادی سے پہلے مسلمانان ہند کا ذہنی رویہ‘‘۔ بحث کو فکری تناظر دینے کے لیے اس کتاب کے بنیادی نکات عرض ہیں۔ ہندوستان کے مسلمانوں کو صدیوں سے یہ غلط فہمی تھی کہ وہ حکومت کرنے کے لیے...
July 15, 2017
میگھ دوت کے موسم میں پھانسی گھاٹ کا میلہ

شریمتی گرجا دیوی 1929میں گنگا کے کنارے بنارس میں پیدا ہوئیں۔ کلا کی سہائتا میں سات دہائیاں بیت گئیں۔ بنارس گھرانے کی ٹھمری کو اپنا مقام دلانے میں گرجا دیوی نے وہی کام دکھایا جو استاد بسم اللہ خان مرحوم نے شہنائی کی سیوا میں کیا۔ یہ فنکار بنارس کے رتن تھے۔ وہی بنارس جسے آزادی کے نام پر ملنے والی زورآوری کی دھونس میں اب واراناسی...