• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

ملک میں ٹرانس جینڈر جیسے قانون کی کوئی گنجائش نہیں،مذہبی رہنما

لاہور(خبرنگار)جامعہ اشرفیہ لاہور کے مہتمم مولانا حافظ فضل الرحیم اشرفی، نائب مہتمم و ناظم اعلیٰ مولانا قاری ارشد عبید،نائب مہتمم مولانا احمد حسن ،حافظ اسعد عبید،حافظ اجود عبیدمولانا حافظ زبیر حسن، مولانا محمد اکرم کاشمیری، مولانا محمد یوسف خان اور مولانا مجیب الرحمن نے کہ ہے ملک میں ٹرانس جینڈرجیسے غلیظ قانون کی کوئی گنجائش نہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ شہدائے پاکستان کے خون سے غداری،اسلام کی خلاف ورزی اور خدا کے غضب کو دعوت دینے کے مترادف ہےجمعیت علماءپاکستان و ملی یکجہتی کونسل کے صدر ڈاکٹر صاحبزادہ ابوالخیر محمد زبیر نے اعلان کہا ہے کہ آج 23ستمبرکوملک بھر میں یوم احتجاج منائے ۔انہوں نے کہا ہے کہ مذکورہ شق ہر کسی کو یہ قانونی حق فراہم کرتی ہے کہ وہ اپنی صنفی شناخت کا تعین اپنی تصوراتی فکر اور مرضی کے مطابق کرے۔مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے چیئرمین علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے ٹرانس جینڈر پروٹیکشن ایکٹ کی شق 3کو انسانی وقار کے منافی قرار دیتے ہوئے ضروری ترامیم کا مطالبہ کیا ہے تحفظ ناموس رسالت محاذ کے ارالعلوم جامعہ نعیمیہ میں ہونے والے اجلاسکی صدارت صدر تحفظ ناموس رسالت محاذ علامہ رضائے مصطفی نقشبندی نے کی جبکہ ناظم اعلیٰ علامہ ڈاکٹرراغب حسین نعیمی نے خصوصی شرکت کی رضائے مصطفی نقشبندی نے کہاکہ ٹرانس جینڈرایکٹ پر علماء کی تحفظات دور کیا جائیں علامہ ڈاکٹرراغب حسین نعیمی نے کہاکہ ٹرانس جینڈرایکٹ کی بعض اصلاحات اورتعریفات میں ابہام ہیں اس لئے ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ حکومت مستند علماء سے رائے لے کر اس قانون میں ترمیم کرے۔
لاہور سے مزید