آپ آف لائن ہیں
منگل 15؍ذیقعد 1441ھ 7؍جولائی 2020ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

برطانیہ: کورونا سے سیاہ فاموں میں اموات گوروں سے چارگنا زیادہ ہے، تحقیق


کورونا وائرس کےحوالے سے جمع شدہ اعداد و شمار کے مطابق برطانیہ میں اس خطرناک وبا سے سیاہ فام افراد میں اموات کی شرح سفید فام افراد کے مقابلے میں چار گنا زیادہ ہے، یعنی ان میں اس وبا سے موت کے امکانات گوری نسل کے لوگوں کے مقابلے چارگنا زیادہ ہے۔

جبکہ دیگر نسلی گروہوں میں بھی اموات کی شرح کچھ زیادہ ہی ہے۔ گزشتہ روز برطانیہ کے قومی شماریاتی ادارے کے دفتر سے جاری ہونے والی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ سیاہ فام خواتین (رپورٹ میں انہیں سیاہ فام کیریبیئن، سیاہ فام افریقین اور سیاہ فام دیگر کے ذریعے سے واضح کیا گیا ہے) سفید فام خواتین کے مقابلے میں 4 اعشاریہ 3 گنا زیادہ اموات کا شکار ہورہی ہیں، جبکہ سیاہ فام مردوں میں یہ تناسب 4 اعشاریہ 2 گنا زیادہ ہے۔

رپورٹ میں یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ بنگلہ دیش، پاکستان، بھارت اور دیگر ملی جلے نسلی گروپوں میں بھی کورونا وائرس سے اموات کے امکانات کافی زیادہ سامنے آئے ہیں۔

اس تحقیقی اعداد و شمار کا جائزہ لینے والے ماہرین کا کہنا ہے کہ اس کی وجہ جزوی طور پر سماجی و معاشی عدم تفاوت کے علاوہ دیگر حالات بھی ہیں لیکن اس فرق کی کوئی اور اہم وجہ اب تک سامنے نہیں آئی ہے۔

یہاں تک کہ عمر اور آبادی کے دیگر فیکٹرز و اقدامات میں خود رپورٹ کردہ صحت کے مسائل کو دیکھنے کے بعد یہ بات سامنے آئی کہ سیاہ فام افراد میں اب بھی سفید فام لوگوں کے مقابلے میں اموات کی شرح دگنی ہے۔

گوکہ اس رپورٹ میں اس رجحان کے پیچھے موجود وجوہات تو واضح طور پر سامنے نہیں آئیں، لیکن یہ بات اس عالمی وبا کے لیے مسلسل کہی جارہی ہے کہ یہ بڑے پیمانے پر توازن قائم کرنے کی کوئی قسم ہے۔

خاص رپورٹ سے مزید