آپ آف لائن ہیں
جمعرات 22؍ ذی الحج 1441ھ13؍اگست2020ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

کراچی: 3 دن کی بارش کے بعد دھوپ نکل آئی


کراچی میں تین دن کی بارش کے بعد آج صبح سویرے دھوپ نکل آئی، شہر کے بعض مقامات سے اب تک پانی کی نکاسی نہ کی جا سکی۔

شہرِ قائد میں بارش کے دوران بجلی کا کرنٹ لگنے سے جاں بحق ہونے والے افراد کی تعداد 15 ہو گئی ہے۔

محکمۂ موسمیات نے آئندہ 24 گھنٹوں کے دوران مطلع کبھی مکمل اور کبھی جزوی ابر آلود رہنے کے ساتھ بوندا باندی اور ہلکی بارش کا امکان ظاہر کیا ہے۔

محکمہ موسمیات کے مطابق آج کراچی کا کم سے کم درجۂ حرارت 26 سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا، جبکہ زیادہ سے زیادہ درجۂ حرارت 34 سے 36 ڈگری سینٹی گریڈ رہنے کا امکان ہے۔

شہرِ قائد میں ہوائیں شمال مشرقی علاقوں سے 18 کلو میٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے چل رہی ہیں، جن میں نمی کا تناسب 72 فیصد ہے۔

شہر میں بارش کا سلسلہ تو رک چکا ہے لیکن بارش کا پانی مختلف مقامات پر تاحال جمع ہے جس کی نکاسی کا انتظام تاحال شروع نہیں ہوا۔

کراچی میں مختلف مقامات، ڈی سی سینٹرل آفس، صدر اور نارتھ ناظم آباد میں بارش کا پانی جمع ہے جبکہ بارش کے بعد سے کچھ علاقوں کی بجلی بھی معطل ہے۔

بفر زون میں ڈی سی سینٹرل آفس کے ساتھ متصل دونوں اطراف کی سڑکوں پر گھٹنوں پانی جمع ہے جس کے باعث علاقہ مکینوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔

یہ بھی پڑھیئے: حیدرآباد-کراچی موٹروے پر احتیاطی تدابیر کی ہدایت

دوسری طرف شہر کے تجارتی مرکز صدر میں ایمپریس مارکیٹ کے سامنے دونوں اطراف کی سڑکیں پانی سے بھری ہوئی ہیں۔

عام دنوں میں صبح کے وقت صدر میں شدید ٹریفک جام ہوتا ہے، اگر صدر سے پانی کی نکاسی نہیں کی گئی تو ٹریفک کے دباؤ کا اثر اطراف کی سڑکوں پر بھی ہوگا۔

اس کے علاوہ نارتھ ناظم آباد میں بھی بارش کا پانی تاحال نہیں نکالا گیا۔

بارش کے بعد حسبِ معمول مختلف علاقوں میں بجلی کی فراہمی معطل ہوگئی، لیاقت آباد سی ون ایریا، ناگن چورنگی سیکٹر الیون ای، نیو کراچی سیکٹر الیون جے ایریا میں کئی گھنٹوں تک بجلی کی فراہمی معطل رہی۔

قومی خبریں سے مزید