• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

سانحہ موٹر وے، ملزمان کی یہ پہلی واردات نہیں ہے


سانحہ موٹر وے میں ملوث ملزمان کی یہ پہلی واردات نہیں ہے، ان کی وارداتوں سے تین دیہات کے رہائشی بھی پریشان ہیں۔

لاہور موٹروے پر خاتون سے زیادتی ڈاکوؤں کی پہلی واردات نہیں ہے، ڈاکوؤں نے کھائی سے اوپر موٹر وے تک آنے کے لیے باضابطہ راستہ بنا رکھا ہے۔ ڈاکو چند سیکنڈز میں جنگل سے موٹر وے پر پہنچ جاتے ہیں۔

واردات کی جگہ کا جیو نیوزنے بھی دورہ کیا تھا، جہاں سے تفتیشی ٹیموں کو بچے کا جوتا ملا تھا جیو نیوز کو وہیں سے بچے کا ایک چشمہ بھی ملا ہے جو زيادہ پرانا نہیں ہے۔

لاہور ایسٹرن بائی پاس پر خاتون سے زیادتی کے واقعے کا مرکزی ملزم ملزم عابد شیخوپورہ کےنواحی علاقے ڈیرہ ملیاں کا رہائشی ہے، اس علاقےکا نیا نام غازی کوٹ ہے۔

جیونیوز کی ٹیم شیخوپورہ میں ملز م عابد کے گھر پہنچی، اس کے چچا نے بتایا کہ ملزم پر پہلے بھی چوری کا مقدمہ بنا تھا، محلے داروں کا کہنا ہے کہ یہ لوگ بدتمیز ہیں، کوئی انہیں منہ نہیں لگاتا۔

موٹر وے زیادتی کیس: ملزمان کا تعاقب جاری ہے، آئی جی پنجاب

پنجاب پولیس کے انسپکٹر جنرل (آئی جی) پولیس انعام غنی نے کہا ہے کہ موٹر وے پر خاتون کے ساتھ زیادتی کرنے والےملزمان کی شناخت کے لیے الیکشن کمیشن، نادرا سے ڈیٹا لیا، سائنٹیفک تحقیقات میں وقت لگتاہے، عابد علی نامی لڑکے کا سارا ریکارڈ حاصل کیا۔

آئی جی پنجاب نے کہا کہ راتوں رات ہم نے فورٹ عباس سے ساری تفصیلات جمع کیں، عابد علی کےنام پر 4 ٹیلی فون سمز تھیں، جو وہ بند کرچکا تھا۔

لاہور میں پریس کا نفرنس کرتے ہوئے انعام غنی نے کہا کہ گزشتہ رات 12 بجے کے قریب کنفرم ہوا کہ عابد علی واقعے میں ملوث ہے، عابد علی کا پہلے ڈی این اے ٹیسٹ ہوا تھا جس سے نمونے میچ کرگئے، راتوں رات ہم نے ملزم کی تمام تفصیلات حاصل کیں۔

آئی جی پنجاب نے کہا کہ ملزم عابد کے نام پر 4 سمیں تھیں جو وہ مختلف اوقات میں بند کرچکا تھا، ایک سم جو ملزم استعمال کررہا تھا اس کے نام پر نہیں تھی، ہم ملزم کے ساتھی تک پہنچنے میں بھی کامیاب ہوئے، ملزم عابد کا گھر کھیتوں میں ایک ڈیرے پر ہے۔

انہوں نے کہا کہ ملزم کے گھر پرچھاپے کے دوران ملزم عابد اور اس کی بیوی فرار ہوگئے، دوسرے ملزم وقار کے گھر بھی چھاپا مارا گیا لیکن وہ بھی فرار ہوچکا تھا، ملزمان کا تمام ریکارڈ موجود ہے، ہم ان کے پیچھے ہیں۔

آئی جی پنجاب نے کہا کہ سی ٹی ڈی اور لاہور پولیس سب ملزمان کے پیچھے ہیں، جلدملزمان تک پہنچنےمیں کامیاب ہوجائیں گے، ملزمان کو گرفتار کرلیں گے۔

انعام غنی نے کہا کہ ملزمان کی اطلاع فوری طور پر 15پر دیں، ملزم کے ایک نمبر سے ہم اس کے ایک ساتھی تک پہنچنے میں کامیاب ہوئے، قلعہ ستار شاہ میں چھاپے کے دوران ملزم عابد اور اس کی بیوی فرار ہوگئے۔

آئی جی پنجاب نے کہا کہ ملزم عابداوراس کی بیوی کھیتوں میں فرار ہوگئے، اس کی بچی ہمیں ملی ہے، ملزمان ابھی تک گرفتار نہیں ہوئے ہم ان کے تعاقب میں ہیں۔

قومی خبریں سے مزید