آپ آف لائن ہیں
پیر4؍جمادی الثانی 1442ھ 18؍جنوری2021ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

شیری رحمٰن کا علی قاسم گیلانی کی فوری رہائی کا مطالبہ


پاکستان پیپلزپارٹی کی نائب صدر سینیٹر شیری رحمٰن نے پنجاب پولیس سے سابق وزیرِ اعظم یوسف رضا گیلانی کے صاحبزادے علی قاسم گیلانی کو فوری رہا کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

شیری رحمٰن نے علی قاسم گیلانی کی گرفتاری پر شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ علی قاسم گیلانی پر بہیمانہ تشدد ایک افسوس ناک واقعہ ہے، سنگدلی کی انتہا ہے کہ علی قاسم گیلانی کو قید کر کے کسی کو ملاقات بھی نہیں کرنے دی جا رہی۔

اُنہوں نے کہا کہ پولیس افسران واٹس ایپ پر موصول ہونے والی ہدایات پر کام کے بجائے آئین کی پاسداری کریں۔

شیری رحمٰن نے یہ بھی کہا کہ حکومت اپوزیشن کے خلاف ریاستی طاقت استعمال کرنے سے باز آئے، وفاقی وزیر نے کل سکھر میں جلسہ کیا، حکومت کا دہرا معیار قابلِ مذمت ہے۔

اُن کا مزید کہنا ہے کہ وفاقی حکومت کورونا وائرس کے نام پر اپوزیشن کو نشانہ بنا رہی ہے۔

واضح رہے کہ ملتان میں گرفتار کیئے گئے سابق وزیرِ اعظم یوسف رضا گیلانی کے صاحبزادے اور پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما علی قاسم گیلانی کو ڈپٹی کمشنر ملتان کی جانب سے ایک ماہ کے لیے جیل بھیجنے کے احکامات جاری کر دیئے گئے ہیں۔

ڈپٹی کمشنر ملتان کی جانب سے علی قاسم گیلانی کی گرفتاری کے سلسلے میں جاری کیئے گئے مراسلے کے مطابق علی قاسم گیلانی نے کورونا وائرس کی ایس او پیز کی خلاف ورزی کی اور زندگیوں کو خطرے میں ڈالا، علی قاسم گیلانی اسٹیڈیم میں جلسہ کرنا چاہتے ہیں لیکن اس کی اجازت نہیں ہے۔

ڈپٹی کمشنر ملتان کا سرکاری مراسلے میں کہنا ہے کہ جلسہ کرنا کورونا وائرس ایس او پیز کی خلاف ورزی ہے، علی قاسم گیلانی لوگوں کو جلسے کے لیے اکسا رہے ہیں۔

قومی خبریں سے مزید