آپ آف لائن ہیں
جمعرات12؍رجب المرجب 1442ھ25؍فروری 2021ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

ہم علی سدپارہ کے ادھورے مشن کو پورا کرنے کیلئے اُن کے بیٹے کیساتھ کھڑے ہیں: علی ظفر

عالمی شہرت یافتہ گلوکار علی ظفر کہتے ہیں کہ وہ پانچ فروری کو سردیوں میں مہم جوئی کے دوران کے ٹو پر لاپتہ ہونے والے 45 سالہ کوہ پیما محمد علی سدپارہ کے ادھورے مشن کو پورا کرنے کے لیے اُن کے بیٹے ساجد علی سدپار کے ساتھ کھڑے ہیں۔

ٹوئٹر پر ساجد علی سدپارہ نے علی ظفر کی اُس آڈیو سانگ کی ویڈیو شیئر کی جو اُنہوں نے 45 سالہ کوہ پیما محمد علی سدپارہ کو خراجِ تحسین پیش کرنے کے لیے تیار کیا تھا۔

ساجد علی سدپارہ نے ویڈیو شیئر کرتے ہوئے کیپشن میں لکھا تھا کہ ’میں خود کو میرے والد کے لیے تیار کیے گئے اس زبردست گانے کو سُننے سے روک نہیں پارہا ہوں۔‘

اُنہوں نے کہا تھا کہ ’یہ گانا جہاں میرے دل کو ٹکڑوں میں تقسیم کررہا ہے تو وہیں اس گانے سے مجھے ایک طاقت بھی مل رہی ہے۔‘

ساجد علی سدپارہ نے کہا تھا کہ ’اس گانے کی وجہ سے مجھے میرے والد کو ادھورنے مشن کو پورا کرنے کی ہمت مل رہی ہے۔‘

علی ظفر نے ساجد علی سدپارہ کے اس ٹوئٹ کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ ’میں آپ کے والد کے کھونے پر آپ سے معذرت کرتا ہوں کیونکہ یہ ایک بہت بڑا نقصان ہے۔‘

گلوکار نے کہا کہ ’انشاءاللّہ آپ اپنے والد کے ادھورے مشن کو مکمل کریں گے۔‘

اُنہوں نے مزید کہا کہ ’اس مشن کو پورا کرنے کے لیے ہم آپ کا ہر طرح سے ساتھ دیں گے۔‘

خیال رہے کہ دو روز قبل محمد علی سدپارہ کے بیٹے ساجد سدپارہ نے حکومت گلگت ٹوارزم کے ہمراہ پریس کانفرنس میں والد کی موت کی تصدیق کی۔

دنیا کے دوسرے بلند ترین پہاڑ کے ٹو کو سرما میںں سر کرنے کی مہم پر جانے والے پاکستانی کوہ پیما محمد علی سد پارہ اور دیگر دو کوہ پیماؤں کو لاپتہ ہوئے 10 دن سے زائد ہوگئے ہیں۔

لاپتہ ہونے والے کوہ پیماؤں کی تلاش کے لیے پاکستان آرمی اور دیگر بین الاقوامی اداروں کی جانب سے سرچ آپریشن کیا گیا لیکن کوہ پیماؤں کا کچھ پتا نہیں چل سکا۔

5 فروری کو ساجد سدپارہ آکسیجن سلینڈر میں مسئلے کے باعث واپس بیس کیمپ آگئے تھے لیکن ان کے والد محمد علی سدپارہ بیس کیمپ سے واپس نہیں لوٹے تھے۔

انٹرٹینمنٹ سے مزید