آپ آف لائن ہیں
ہفتہ4؍رمضان المبارک 1442ھ 17؍اپریل 2021ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

چاولوں کے پانی سےخوبصورتی میں اضافہ

چاول ایک ایسی غذا ہے جسے ہر عمر کا فرد یکساں پسند کرتا ہے اور یہ غذا دسترخوان پر تقریباً ہر روز ہی سجتی ہے، چالوں کے پکانے سے قبل اسے بگھونے کی صورت میں حاصل ہونے والے پانی کے حیرت انگیز فوائد اگر آپ جان لیں تو اسے پھینکنے کے بجائے اپنی خوبصورتی بڑھانے کے لیے اس کا استعمال شروع کر دیں گے۔

بیوٹیشن اور کاسمیٹکس  ماہرین کی جانب سے چاولوں کے پانی کو خوبصورتی میں اضافے کے لیے اہم ترین جز قرار دیا جاتا ہے، چالوں کے پانی کا استعمال صدیوں سے خوبصورتی بڑھانے کے لیے کیا جا رہا ہے، چاولوں کو ابال کر یا اسے پیس کر کئی طرح کے فیس ماسک میں استعمال کیا جاتا ہے جبکہ چاولوں کے پاؤڈر کو شہد میں ملا کر بہترین وائٹننگ اسکرب بھی بنایا جاسکتا ہے۔

ماہرین کے مطابق چالوں کا پانی ایک وائٹننگ ایجنٹ کا کردار ادا کرتا ہے جبکہ اس کے پانی کے استعمال سے جِلد اور بالوں کی صحت پر ان گنت فوائد حاصل ہوتے ہیں، چاولوں کے پانی کی افادیت کو مد نظر رکھتے ہوئے بہت ساری کاسمیٹک کمپنیز نے بھی دعویٰ کرنا شروع کر دیا ہے کہ اُن کے شیمپو اور کریم میں چاولوں کا پانی استعمال کیا گیا ہے۔

چاولوں کے پانی کے کیا فوائد ہیں؟

چاولوں کا پانی ایک قدرتی ٹانک کا کردار ادا کرتا ہے جس کے استعمال سے جلد اور بال نرم و ملائم ہو جاتے ہیں، چاولوں کے پانی میں اضافی مقدار میں وٹامنز اور منرلز پائے جاتے ہیں۔

بیوٹیشن اور کاسمیٹکس  ماہرین کا کہنا ہے کہ بغیر کسی نقصان کے خوبصورتی میں اضافے کے لیے قدرتی جز چاولوں کے پانی کا استعمال کیا جا سکتا ہے، یہ جِلد اور بالوں کے مختلف امراض کے علاج میں کار آمد ہے۔

ایکنی، کیل مہاسوں کا خاتمہ

گرمیوں کے آتے ہی جلد پر اضافی تیل آنے کے سبب سب سے پہلے چہرے پر دانے اور اس کے نتیجے میں داغ دھبے بننا شروع ہوتے ہیں جو کہ نہایت ناگوار دکھتے ہیں اور شخصیت کو متاثر کرتے ہیں۔

یہ ایکنی اور کیل مہاسے ہارمونز میں خرابی کی وجہ سے بھی ہوتے ہیں مگر جِلد کی صفائی سے ان میں خاطر خوا ہ کمی لائی جا سکتی ہے، ۔

چاولوں کا پانی کیل مہاسوں کے خاتمے کے لیے ایک قُدرتی دوا ہے جو جلد کے کھلے مساموں کو بند کرتا ہے اور کیل مہاسوں کو ختم کرنے میں مدد فراہم کرتا ہے، چہرے پر چاولوں کے پانی کے استعمال کے لیے اسے پہلے فریج میں رکھ کر ٹھنڈا کر لیں اور پھر روئی کی مدد سے دانوں پر لگائیں ۔

چاولوں کے پانی میں کوئی صاف سوتی کپڑا یا ٹشو بھگو کر اپنے پورے چہرے پر بھی رکھاجا سکتا ہے، یہ عمل 15 سے 20 منٹ کے لیے روزانہ دہرائیں ، اس کے نتیجے میں چہرہ صاف شفاف اور رنگ نکھر جائے گا۔

بہترین فیشل کلینزر

چاولوں کا پانی کلینزنگ کا کام بھی کرتا ہے اور چہرے پر جمی گرد کو صاف کر کے چہرے کو تازگی اور شادابی بخشتا ہے، چاولوں کو پیس کر اس کا پانی کے ساتھ پیسٹ بنا کر اسے بطور ماسک بھی استعمال کیا جا سکتا ہے، چاول کے پانی میں موجود وٹامن بی کمپلیکس کے باعث چہرے کی جھریاں ختم اور کیل مہاسے دور ہو جاتے ہیں۔

چاولوں کے پانی میں ایسے وٹامنز اور منرلز شامل ہوتے ہیں جو چہرے کے مُردہ خلیوں کو  صاف کرنے اور متاثرہ خلیوں کی صحت بحال کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں اور رنگت کو صاف کرنے میں انتہائی مددگارثابت ہوتے ہیں۔

بالوں کی بہترین نشونما

چاولوں کا پا نی بطور شیمپو بھی استعمال کیا جاسکتا ہے، اس میں موجود آئرن، زنک اور وٹامن بی کمپلیکس بالوں کی افزائش میں اہم کردار ادا کرتا ہے، اگر چاولوں کے پانی سے بالوں کو دھویا جائے تو بال جَلد ہی گرنا بند ہو جاتے ہیں اور گھنے، چمک دار بھی ہوتے ہیں۔

چاولوں کا پانی بالوں کو نرم بنا کر الجھنے سے بچاتا ہے اور قدرتی چمک بحال کرتا ہے، اسے بالوں پر باقاعدگی سے استعمال کرنے کے نتیجے میں بال لمبے بھی ہوتے ہیں۔

چاول کے پانی میں سرسوں کا تیل شامل کر کے استعمال کرنے سے بال گھنے چمکدار اور نرم ملائم ہوتے ہیں۔

بالوں کو شیمو کرنے کے بعد بالوں پر چاولوں کا پانی ڈال کر ہلکے ہاتھوں سے 5 منٹ مساج کریں ، بعد ازاں بالوں کو صاف پانی سے نتھار لیں، بال سلکی نرم اور چمکدار نظر آئیں گے۔


چاولوں کا پانی حاصل کرنے کا طریقہ

چاولوں کا پانی حاصل کرنے کے لیے چاولوں کو کسی بھی برتن میں ڈالیں اور ایک پانی دھو کر نکال لیں، اب اس میں مطلوبہ پانی کی مقدار شامل کریں اور 2 سے 3 گھنٹوں کے لیے رکھ دیں۔

چاولوں اور پانی کو رات بھر بھی بھگویا جا سکتا ہے، بعد ازاں پانی چھان کر استعمال کر لیں اور چاول پکا لیں۔

چاولوں کے پانی کو محفوظ کرنے کے لیے چاولوں سے پانی چھان کر اسے ایئر ٹائٹ برتن میں ڈال کر فریج میں ایک ہفتے تک محفوظ کیا جا سکتا ہے۔

چاولوں کو سادہ پانی میں اُبال کر بھی اس کا پانی حاصل کیا جا سکتا ہے ۔

صحت سے مزید