• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

انتخابی قوانین ترامیم، بل غیرآئینی، سینیٹ کے منظور کرنے پر بھی موقف نہیں بدلے گا، ذرائع الیکشن کمیشن

اسلام آباد ( نمائندہ جنگ) انتخابی قوانین میں ترامیم کے سرکاری بل پر الیکشن کمیشن نے آئینی ماہرین اور سیاسی جماعتوں کی آراء طلب کر لیں ،اسلام آباد میں ذرائع کا کہنا ہے کہ الیکشن کمیشن نے 10 جون کو قومی اسمبلی سے پاس ہونے والے انتخابی قوانین میں ترامیم کے سرکاری بل کو غیر آئینی قرار دے دیا تھا۔

جمعہ کو حکومت نے اعلان کیا کہ قومی اسمبلی سے منظور ہونے والا بل سینٹ کو ریفر کر دیا گیاہے اور سینٹ سے بھی اسے منظور کر ایا جائے گا، جبکہ الیکشن کمیشن کے ایک اہم ذریعے نے اس ضمن میں اپنے موقف کا اعادہ کیا کہ سرکاری بل غیر آئینی ہے اور اگر سینٹ نے بھی اسے پاس کر دیا تو الیکشن کمیشن کا موقف تبدیل نہیں ہو گا۔

ذرائع کے مطابق الیکشن کمیشن نے اس سارے معاملے کو سیاسی پارٹیوں اور آئینی ماہرین کے سامنے رکھنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ سرکاری بل پر سیاستدانوں اور آئینی ماہرین کی آرا ء سے استفادہ کیا جاسکے گا۔

الیکشن کمیشن نے اس ضمن میں صدر مملکت کو بھی آئینی صورتحال سے واضح کر دیا ہے ،تاہم الیکشن کمیشن کی جانب سے حکومت کو پیغام دیا گیا ہے کہ وہ آئینی طور پر اپنے سرکاری فرائض کی انجام دہی میں حکومت کے سامنے جواب دہ نہیں ۔

اہم خبریں سے مزید