• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

ایٹمی ٹیکنالوجی کے استعمال میں پاکستان نے’’حفاظت‘‘ کو سب سے زیادہ اہمیت دی، آفتاب کھوکھر

ویانا(اکرم باجوہ)آسٹریا میں سفیرپاکستان آفتاب احمد کھوکھر نے ویانا میں بین الاقوامی جوہری توانائی ایجنسی (IAEA) کے بورڈ آف گورنرز کے اجلاس جس کا ایجنڈا آئٹم "نیوکلیئر اینڈ ریڈی ایشن سیفٹی" ہے،سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ایٹمی بجلی کی پیداوار کے شعبے میں طویل تجربہ رکھنے والے ملک کے ساتھ ساتھ ادویات ، صنعت اور زراعت میں ایٹمی ٹیکنالوجی کے استعمال میں پاکستان نے سب سے زیادہ جوہری اور تابکاری حفاظت کواہمیت دی ہے، انہوں نے کہا کہ ایٹمی اور تابکاری حفاظت سے متعلق کئی بین الاقوامی کنونشنز میں ایک فریق کے طور پر پاکستان ایٹمی بجلی گھروں اور متعلقہ سہولیات کے محفوظ اور محفوظ آپریشن کو یقینی بنانے کی اپنی ذمہ داریاں پوری کر رہا ہے۔انہوں نے اس بات پر روشنی ڈالی کہ پاکستان کے پاس ایک آزاد نیوکلیئر ریگولیٹری باڈی پاکستان نیوکلیئر ریگولیٹری اتھارٹی ہے جو آئی اے ای اے کے جاری کردہ اعلیٰ ترین حفاظتی معیارات کی تعمیل کو یقینی بناتی ہے۔ سالانہ جنرل کانفرنس کے ساتھ ساتھ بورڈ آف گورنرز آئی اے ای اے کے دو اعلیٰ ترین پالیسی ساز اداروں میں سے ایک ہے۔ پاکستان آئی اے ای اے کے بورڈ آف گورنرز میں باقاعدگی سے خدمات انجام دیتا ہے اور اس کے مباحثوں میں حصہ ڈالتا ہے جو کہ ایٹمی ٹیکنالوجی کے پرامن استعمال میں پاکستان کی کامیابیوں کی پہچان ہے۔

یورپ سے سے مزید