Dr Lubna Zaheer - Urdu Columns Pakistan | Jang Columns
| |
Home Page
ہفتہ 7؍ جمادی الثانی 1439ھ 24؍ فروری 2018ء
ڈاکٹر لبنٰی ظہیر
زیب داستاں
February 10, 2018
عوامی عدالت لگنے کو ہے

یہ بات تو اب طے ہی نظر آتی ہے کہ 3 مارچ کو سینیٹ کے انتخابات ہو جائیں گے۔ اس مرتبہ ارکان کی خرید و فروخت ) جسے عرف عام میں ہارس ٹریڈنگ کہا جاتا ہے( کے امکانات کا خاصا چرچا ہے۔ پیپلز پارٹی کا بلوچستان اسمبلی میں ایک بھی رکن نہیں ، لیکن وہ وہاں سے چار پانچ سینیٹرز کی توقع لئے بیٹھی ہے۔ اگر ایسا ہی ہوتا ہے یا وہ ایک دو سیٹیں ہی لے جاتی ہے...
January 27, 2018
لاہور کا فلاپ جلسہ اور قومی سیاست

بعض اوقات بظاہر بہت ہی چھوٹے اور غیر اہم سے واقعات سیاسی ماحول پر اتنا گہرا اثر ڈالتے ہیں کہ دیکھتے دیکھتے منظر نامہ تبدیل ہونے لگتا ہے۔ اندازہ اور گمان یہ تھا کہ عمران خان اور آصف علی زرداری کا طاہر القادری کے کنٹینر تک آجانا کوئی معمولی بات نہ تھی۔ طاہر القادری تو اب پارلیمانی سیاست کے کھلاڑی نہیں رہے۔ مشرف کے دور میں عمران...
January 13, 2018
قصور کا سانحہ اور نئے سیاسی زائچے

قصور سے تعلق رکھنے والی سات سالہ بچی، زینب کا انتہائی وحشیانہ اور بہیمانہ قتل اس وقت پورے قومی افق، بالخصوص پنجاب پر چھایا ہوا ہے۔ اس قتل نے ہر حساس پاکستانی کا دل خون کر دیا ہے۔ اس واقعہ کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے۔ اسکے ساتھ ہی مشتعل مظاہرین کی توڑ پھوڑ، پر تشدد مظاہروں اور پولیس کی فائرنگ سے تین افراد کا جاں بحق ہونا، اس سانحے...
December 23, 2017
سیاسی بے یقینی کا خاتمہ

مردم شماری اور حلقہ بندیوں سے متعلق آئینی ترمیمی بل 2017کی منظوری نہایت اچھی خبر ہے۔ قومی اسمبلی میں یہ بل 16نومبر کو منظور ہوا تھا۔تاہم سینیٹ میں اس کی منظوری کو 35 دن لگ گئے۔ یہ پینتیس روز سیاسی منظرنامے پر بہت بھاری گزرے۔ اس دوران انتخابات 2018ءسےمتعلق طرح طرح کے خدشات اور افواہیں زیر گردش رہیں۔ ٹیکنوکریٹ حکومت کی باتیں ہوتی رہیں۔...
December 09, 2017
ہم کب سبق سیکھیں گے؟

فیض آباد دھرنے کا اختتام ہوئے کئی روز بیت چکے ہیں۔ اس دھرنے کے اثرات مگر تادیر باقی رہیں گے۔ ابھی تو 2014 کے دھرنے کے اثرات بھی کامل طور پر زائل نہیں ہو سکے۔ہماری سیاست، معیشت اور سماج پر اس زمانے کے نقوش محسوس کیے جا سکتے ہیں۔ فیض آباد دھرنے کا معاملہ بھی مختلف نہیں۔ یہ دھرنا اپنے پیچھے بہت سے اہم سوالات چھوڑ گیا ہے۔ صرف مسلم لیگ...
November 25, 2017
عالمی یوم برداشت اور ہم

اقوام متحدہ نے16نومبرکو ’’عالمی یوم برداشتـ‘‘ کے طور پر متعارف کروا رکھا ہے۔ اس دن کو منانے کا بنیادی مقصد دنیا کے مختلف ممالک اور معاشروں میں برداشت اور رواداری کو فروغ دیناہے۔ آج کی دنیا ایک گلوبل ویلج ہے، چنانچہ اس بار اس دن کی گونج ہمارے ہاں بھی سنائی دی۔ مختلف تقریبات منعقد ہوئیں، جن میں برداشت کی اہمیت اور ضرورت کا تذکرہ...
November 15, 2017
علامہ اقبال۔ تقریبات اور تعلیمات

اگلے برس علامہ اقبال کو اس دنیا سے رخصت ہوئے اسی سال ہو جائیں گے۔ آٹھ دہائیاں کافی طویل عرصہ ہے۔ 9نومبر کو ہم نے انکا 140 واں یوم پیدائش منایا۔ یہ بھی غنیمت ہے کہ کسی نہ کسی حوالے سے ہم نے علامہ اقبال کو یاد رکھا ہو ا ہے۔ انکے یوم ولادت کے حوالے سے ہونیوالی قومی تعطیل تو اب ختم کر دی گئی ہے ، لیکن علامہ اقبال کے نام سے کہیں سرکاری اور...
November 04, 2017
کون کب سبق سیکھے گا؟

شاید یہ انسان کی فطرت میں شامل ہے کہ وہ ماضی اور تاریخ سے سبق نہیں سیکھتا۔ ہم پاکستانیوں پر یہ اصول کچھ زیادہ ہی لاگو ہوتا ہے۔ معاشرے کا کوئی طبقہ اور ملک کا کوئی ادارہ ایسا نہیں جو ماضی کی غلطیوں اور کوتاہیوں کو سامنے رکھتے ہوئے اپنی اصلاح پر توجہ دے اور طے کر لے کہ آ ئندہ وہ اس غلطی کا ارتکاب نہیں کرے گا۔ آپ پیچھے پلٹ کر دیکھئے۔...
October 21, 2017
میڈیا کی بے سمتی

ایک خبر کے مطابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے ’’پاکستان الیکٹرانک میڈیا ریگولیٹری اتھارٹی‘‘ یعنی پیمرا کے حکام سے کہا ہے کہ مختلف چینلز کے خلاف عدالتوں میں جاری مقدمات واپس لے لئے جائیں۔ جناب وزیر اعظم کی دلیل یہ ہے کہ اگر برسوں ان مقدمات کے فیصلے نہیں ہونے اور چینلز نے اپنی روش جاری رکھنی ہے تو پھر اس بے سود مشق کو ختم کر دینا...
October 14, 2017
حالات کے تقاضے اور ہم

عالمی بنک کی جنوبی ایشیاسے متعلق اقتصادی رپورٹ خبر دیتی ہے کہ سابق وزیر اعظم نواز شریف کی معزولی سے جنم لینے والی سیاسی بے یقینی کے باعث پاکستان کی معاشی ترقی کی شرح کم ہونے کا خدشہ ہے۔یعنی وہ معاشی استحکام جوگزشتہ چار برسو ں میں ہمیں نصیب ہوا، سیاسی بے یقینی اور عدم استحکام کی نذر ہونے کا خطرہ ہے۔ دوسری طرف پاک چین اقتصادی...
September 30, 2017
عمران خان کا نیا مطالبہ

خان صاحب کی سیاسی حکمت عملی کا بنیادی نکتہ یہ ہے کہ وہ مسلسل کوئی نہ کوئی مطالبہ کرتے رہیں۔ وہ اس مطالبے کو سیاسی سرگرمی اور گہما گہمی کیلئے استعمال کرتے ہیں۔ جلوس نکالتے ، جلسے کرتے اور ضرورت پڑے تو دھرنے بھی دیتے ہیں۔ اسکا ایک فائدہ تو یہ ہوتا ہے کہ انکے کارکنان کا لہو گرم رہتا ہے اور دوسرا یہ کہ وہ خود ایک اپوزیشن لیڈر کے طور پر...
September 16, 2017
حلقہ 120 کا انتخاب: ایک بڑا سیاسی معرکہ

کہتے ہیں اور شاید ٹھیک ہی کہتے ہیں کہ سیاست بے یقینی کاکھیل ہے۔ کسی بھی وقت کوئی بات حتمی طور پر نہیں کہی جاسکتی۔ ان دنوں پورے پاکستان کی نظریں لاہور کے قومی اسمبلی کے حلقہ120 پر جمی ہیں۔ کہنے کو تویہ محض ایک ضمنی انتخاب ہے۔2013کے بعد سے بیسیوں ضمنی انتخابات ہو چکے ہیں۔ سو اس لحاظ سے یہ معمول کی ایک سیاسی سرگرمی سمجھی جانی چاہیے لیکن...
September 09, 2017
جذباتیت یا حکمت؟

میانمار(برما) میں روہنگیا مسلمان بد ترین مظالم کا نشانہ بنے ہوئے ہیں۔ ایسا پہلی بار نہیں ہوا۔ ماضی میں بھی حکومتی اور سرکاری سر پرستی میں انکے خلاف آپریشن ہوتے رہے ۔ گزشتہ کئی دہائیوں سے انکی نسل کشی، معاشی اور سماجی استحصال کا یہ سلسلہ جاری ہے۔ روہنگیا مسلمانوں کا قتل عام اور خواتین کی عصمت دری معمول کے واقعات ہیں۔ کہنے کی حد تک...
September 02, 2017
لاہور کا انتخابی معرکہ

قومی اسمبلی کے حلقہ NA-120میں انتخابی مہم کا آغاز ہو چکا ہے۔ نامزد امیدوار اور سیاسی کارکنان، پارٹی اجلاس، جلسے جلوس اور ریلیوں کے انعقاد میں مصروف ہیں۔ اس وقت حلقے میں چار نمایاں سیاسی جماعتیں نظر آتی ہیں۔ مسلم لیگ (ن)، تحریک انصاف، پی پی پی اور جماعت اسلامی۔ تاہم اصل مقابلہ مسلم لیگ (ن) اور تحریک انصاف کے مابین ہونا ہے۔ یہ کہنا...