Dr Safdar Mehmood - Urdu Columns Pakistan | Jang Columns
| |
Home Page
جمعرات 5؍ جمادی الثانی 1439ھ 22؍ فروری 2018ء
ڈاکٹر صفدر محمود
February 20, 2018
شاعر کا خواب

سوچتے سوچتے میں مرشدی علامہ اقبال کے پہلو میں جا بیٹھا اور ان کا وہ مشہور شعر گنگناتے ہوئے زیر لب مسکرانے لگا۔ وہی شعر کہ ملت میں یوں گم ہو جا کہ باقی افغانی رہے نہ ایران نہ تورانی۔ شاعر بنیادی طور پر خوابوں کا پیامبر ہوتا ہے۔ یہ خواب پورے ہو جائیں تو شاعر کی عظمت کو چار چاند لگ جاتے ہیں لیکن اگر خواب ادھورے رہیں تو لوگ ایسی شاعری...
February 16, 2018
احساس زیاں جاتا رہا

منزل تو کھوٹی ہونی ہی تھی، متاع کارواں بھی لٹ گیا اور اصل نقصان یہ ہوا ہے کہ کارواں کے دل سے احساس زیاں بھی جاتا رہا ہے۔ سچی بات یہ ہے کہ احساس زیاں کو مٹانے میں ہمارے سیاسی کلچر کا کردار سب سے اہم ہے کیونکہ ہماری سیاست کی بنیاد ہی کرپشن پر ہے۔ سیاسی عمارت کی جس اینٹ کو ہاتھ لگایئے نیچے سے کرپشن برآمد ہوتی ہے اور پھر اس طرح کی کرامات...
February 13, 2018
بتانِ وہم وگماں

سمجھنے کی بات یہ ہے کہ مسلمان کی مسلمانی لاالٰہ الا اللہ سے مشروط ہے۔ اس سے جتنا رشتہ مضبوط ہوگا، مسلمانی اسی قدر مضبوط ہوگی کیونکہ لا الٰہ الا اللہ کو خلوص سے اپنانے کے بعد انسانی قلب ہر قسم کے بتوں سے پاک اور صاف ہوجاتا ہے اور دنیاوی مفادات ہیچ لگنے لگتے ہیں۔ عام طور پر انسانی دل حرص و ہوس، اقتدار، دولت، شہرت کے بتوں سے بھرا رہتا...
February 09, 2018
حکمت کے امین

بزرگوں سے باربار سنا ہے کہ اللہ پاک کے کاموں میں کوئی نہ کوئی بہتری ہوتی ہے۔ اس بات کو حضرت علی بن عثمان ہجویری المعروف داتا گنج بخش ؒ نے اپنی مشہور زمانہ کتاب کشف المحجوب میں یوں بیان کیا ہے ’’اللہ تعالیٰ کےفیصلے الل ٹپ نہیں ہوتے‘‘ یعنی ان فیصلوں کے پس پردہ کوئی حکمت، کوئی بہتری اورکوئی مصلحت پوشیدہ ہوتی ہے۔ میں نے اپنی زندگی...
February 06, 2018
انٹ شنٹ

دانائے راز کہتا ہے کہ ملک کے حالات خراب ہورہے ہیں۔ میں عرض کرتاہوں کہ تشویش میں مبتلا نہ ہوں، انتخابی سال یعنی Election Year میں ایسا ہی ہوتاہے۔ سیاست میں گھمسان کا رن پڑتا ہے، پارے چڑھ جاتے ہیں، ایک دوسرے پر پتھر پھینکے جاتے ہیں اور دل میں گالیاں دی جاتی ہیں اور ہرشے تنقید کی زد میں آتی ہے۔ یہ حالات کی خرابی کی علامت نہیں بلکہ جمہوری...
February 02, 2018
تعلیم کی زبوں حالی اور ہمارا قومی مستقبل

پہلی نظر میں ہی مجھے وہ شخص پڑھا لکھا اور مہذب لگا، پھر ان سے کبھی مسجد میں اور کبھی سرراہے گپ شپ ہونے لگی۔ تعارف دونوں طرف سطحی تھا۔ نہ وہ مجھے اچھی طرح جانتے تھے اور نہ ہی میں ان کے بیک گرائونڈ سے واقف تھا۔ ایک روز ان سے چائے پہ تفصیلی ملاقات ہوئی تو یہ جان کر خوشگوار حیرت ہوئی کہ وہ صاحب پروفیسر آف میڈیسن ریٹائر ہوئے تھے اورپھر اس...
January 30, 2018
پکڑ؟

قدرت کا نظام تہہ در تہہ ہے اور اسے سمجھنے کے لئے گہرے مشاہدے، بصیرت اور طویل تجربے کی ضرورت ہوتی ہے مگر یہ سب کچھ ہونے کے باوجود بھی انسان بہت کم سمجھ پاتا ہے۔ بس یوں سمجھ لیجئے کہ ساری زندگی غور کرنے کے باوجود انسان بمشکل میلوں پر محیط آئس برگ یا گلیشیئر کا صرف ایک ٹکڑا سمجھنے میں کامیاب ہوتا ہے۔ ہاں مگر وہ لوگ جن کا باطن منور ہو...
January 23, 2018
دعا کی دستک

جسے ہم ساٹھ ستر اسی نوے سال طویل زندگی سمجھتے اور کہتے ہیں وہ صوفیاء کی زبان میں محض اذان اور نماز کے درمیان کا وقفہ ہے۔ عام لوگوں کے استعارے اور زبان روحانی شخصیات سے بالکل مختلف ہوتی ہیں کیونکہ ہم دنیا دار ظاہر بین ہوتے ہیں، ہماری نگاہ ظاہر کی خوبصورتیوں اور دنیا کے حسن میں گم ہو کر رہ جاتی ہے جبکہ صوفی کی نگاہ ظاہر کے پردوں کو چاک...
January 19, 2018
شیخ مجیب الرحمٰن ۔ ایک مستند گواہ کی گواہی

سوانح عمری کے انداز میں لکھی گئی یہ ایک عینی گواہ کی دلچسپ کتاب ہے جس میں نہایت مستند انکشافات کئے گئے ہیں۔ چشم دید گواہ کا بیان تاریخ کا حصہ تصور ہوتا ہے بشرطیکہ گواہ قابل اعتماد ہو۔ انکشافات کا ذکرکرنے سے پہلے یہ عرض کرنا ضروری سمجھتا ہوں کہ ہمارے اکثر لکھاری تحقیق کے بجائے جذباتی انداز سے فتویٰ جاری کردیتے ہیں اور تجزیے کے...
January 16, 2018
مجھے مایوس ہونے سے بچائو

صدمات و حادثات دل پر زخم لگاجاتے ہیں جو نظر نہیں آتے لیکن اداس اورغمزدہ کر جاتے ہیں۔ اللہ پاک کا نظام ہے کہ وقت ہی زخم لگاتا اور وقت ہی مندمل کرتا ہے۔ دکھ کامداوا ہو جائے تو وہ مرہم بن جاتا ہے لیکن اگر مداوے کی امید دور دور تک نظر نہ آئے تو دکھ اور کرب کی گھڑیاں طویل ہو جاتی ہیں۔ کچھ عرصہ قبل میں ڈیڑھ ماہ کے لئے امریکہ کے ایک شہر میں...
January 12, 2018
مائی ڈیئر میاں محمد نواز شریف صاحب

مائی ڈیئرمیاں محمد نواز شریف صاحب!میں زندگی میں پہلی بار آپ سے یوں مخاطب ہو رہا ہوں کیونکہ آپ کے بیان سے مجھے تھوڑی سی حیرت اور صدمہ ہوا ہے۔ آپ سابق وزیر اعلیٰ اور سابق وزیر اعظم ہیں لیکن سیاسی حکمرانی کے تخت پر متمکن ہونے سے پہلے آپ کبھی گورنمنٹ کالج لاہور میں طالب علم بھی تھے ۔آپ ایف اے میں جس کلاس کے طالب علم تھے یہ محض اتفاق...
January 09, 2018
مفادات کا کھیل

اصول کےطور پر یہ بات ذہن میں رکھیں کہ خارجہ پالیسی اور خارجہ تعلقات میں نہ مستقل دوست ہوتے ہیں اور نہ ہی مستقل دشمن۔ دوستی اور د شمنی ملکی مفادات کے تابع ہوتی ہے اورجب مفادات کا ٹکرائو ہوتاہےتو نہایت قریبی دوستی دشمنی میں بدل جاتی ہے۔ اسی طرح مشترکہ دشمن بعض اوقات قوموں کو ایک دوسرے کےقریب لے آتے ہیں۔ مطلب یہ کہ خارجہ تعلقات کا...
January 05, 2018
خود احتسابی

امریکی صدر ٹرمپ کی دھمکی یا وارننگ کے جواب میں بہت کچھ لکھا اور کہا جاچکا ہے۔ ابھی چند روز مزید ٹرمپ کا خوفناک بیان گلی محلوں سے لے کر طاقت کے ایوانوں تک زیر بحث رہے گا۔ اس مسئلے کا افسوسناک پہلو یہ ہے کہ امریکی نقطہ نظر تو منٹوں میں عالمی افق پر چھا جاتا ہے اور دنیا کے ہر ملک کے اخبارات میں چھپتا اور میڈیا میں جگہ پاتا ہے لیکن اس کے...
January 02, 2018
بلاعنوان

آج حالات حاضرہ پر لکھنے کا ارادہ نہیں تھا کیونکہ ہماری ملکی سیاست تیزی سے رنگ بدل رہی ہے اور نہایت بے یقینی کا روپ دھار رہی ہے۔ اخبارات پڑھیں اور ٹی وی دیکھیں تو اندازوں، تجزیوں اور پیش گوئیوں کا ایک سیلاب بہہ رہا ہے۔ مگر کسی کو علم نہیں کہ یہ طوفان بلا کیا گل کھلائے گا، اے پی سی اور حکومت کے درمیان دن بدن بڑھتی ہوئی کشیدگی،...