• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

ہندو انتہا پسند تنظیم آر ایس کے غنڈوں نے لیسٹر کا امن تباہ کر دیا، کمیونٹی رہنما

لیسٹر (مرتضی علی شاہ / ہارون مرزا) ہندوانتہا پسند تنظیم آر ایس کے غنڈوں نے لیسٹر جیسے پر امن علاقے کا امن تباہ کر دیا۔ ان خیالات کا اظہار لیسٹر کے کمیونٹی رہنما نصیر حسین، ملک صدیق،بابر مشتاق، تنویر حسین گوندل،جاوید عنایت کے علاوہ دلجیت تیر نے روزنامہ جنگ لندن سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ انہو ں نے کہا کہ پاکستانی مسلمانوں نے صبر و تحمل اور رواداری کی شاندار مثال قائم کی ہے۔ پاک ،بھارت کرکٹ میچ کے نتیجے کے بعد ہندو انتہا پسند تنظیم کی آشیر باد سے بعض شر پسند عناصر نے لیسٹر جیسے پر امن علاقے کا امن تباہ کر دیاہے، لیسٹر میں مختلف رنگ و نسل کے دیگر ممالک کے رہائشی افراد بھی اس امر کے گواہ ہیں کہ پاکستانیوں نے تاریخی صبر وتحمل کا مظاہرہ کیا، اس کشیدہ صورتحال کا برطانیہ اور باالخصوص لیسٹر متحمل نہیں ہو سکتا،آج بھی ہم مختلف رنگ و نسل کی تفریق کیے بغیر باہمی محبت و یگانت کا مظاہرہ کر رہے ہیں ۔ ہندوستانی حکمرانوں نے بھارتی نوجوانوں کی اکثریت کا ذہن اس قدر انتہا پسندانہ سوچ سے بھر دیا ہے کہ ان کے نزدیک انسانیت اور دیگر مذاہب کی کوئی قدر و منزلت نہیں۔ انہوں نے قانون نافذ کرنے والے اداروں کو لیسٹر میں امن و امان کی بحالی کیلئے گرانقدر کاوشیں کرنے پر مبارکباد پیش کی اور مطالبہ کیا کہ لیسٹر میں مذہبی فسادات برپا کرنے والے ذمہ داروں کا کڑا احتساب کیا جائے تاکہ آئندہ کوئی ایسی حرکت نہ کرسکے۔ یہ امر قابل ذکر ہے کہ تاحال لیسٹر میں حالات کشیدہ ہیں اور پولیس امن و امان کی بحالی کیلئے تمام وسائل بروئے کار لا رہی ہے ۔ دریں اثنابرطانیہ کے شہر مشرقی لیسٹر میں 15ستمبر کے روز پاک ،بھارت میچ کے دوران شروع ہونے والی مسلم،ہندو کشیدگی برمنگھم سٹی سینٹر تک پہنچ گئی، ایشیا کپ میں پاک، بھارت میچ کے بعد پاکستان نژاد برطانوی اور بھارت نژاد برطانوی نوجوانوں کے درمیان جھگڑا ہوا تھا جس کے بعد اب تک 30سے زائد نوجوان گرفتار کئے جا چکے ہیں، برمنگھم میں نوجوانوں کے ایک گروپ نے مظاہرہ کیا جس کے بعد کمیونٹی رہنماؤں نے نوجوانوں کو صبر و تحمل سے کام لینے کا مشورہ دیا ہے۔ دوسری جانب پولیس نے نوجوانوں کو سوشل میڈیا پر محتاط رویہ اختیار کرنے کی ہدایت کی ہے۔
یورپ سے سے مزید