آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
جمعہ20؍محرم الحرام 1441ھ 20؍ستمبر 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

پاکستان کے دیگر کرکٹرز کی طرح بالآخر شرجیل خان نے اسپاٹ فکسنگ کرنے کا جرم مان لیا۔ سلمان بٹ، محمد عامر اور محمد آصف بھی پہلے اپنی بے گناہی کا دعویٰ کرتے رہے بعد میں انہوں نے جرم مان لیا تھا۔


کرکٹ میں واپسی کے لیے ٹیسٹ اوپنر شرجیل خان نے پاکستان سپر لیگ کے دوران اسپاٹ فکسنگ کرنے کا اعتراف کر لیا ہے، ان کی فوری طور پر فرسٹ کلاس کرکٹ میں واپسی کا کوئی امکان نہیں ہے۔

توقع ہے کہ وہ فروری میں پاکستان سپر لیگ میں واپس آئیں گے۔

پی سی بی اینٹی کرپشن یونٹ کے ذمے دار ذرائع کا کہنا ہے کہ بائیں ہاتھ کے بیٹسمین پر اینٹی کرپشن کی پانچ شقوں کی خلاف ورزی کا الزام تھا، انہوں نے تمام شقوں میں اپنی غلطی مان لی ہے۔

شرجیل خان نے اپنے جرم کا اعتراف کرتے ہوئے ندامت اور شائقین کرکٹ سے اپنے جرم پر پشیمانی کا اظہار کیا ہے۔

اسپاٹ فکسنگ کیس میں سزا پوری کرنے کے بعد شرجیل خان کا کہنا ہے کہ میں غیر مشروط معافی مانگتا ہوں، میرے ایک غیر ذمہ دارانہ عمل کے باعث انہیں شرمندگی کا سامنا کرنا پڑا، میں یقین دلاتا ہوں کہ مستقبل میں ذمہ داری کا مظاہرہ کروں گا۔ میں پی سی بی، اپنی ٹیم، شائقین کرکٹ اور اپنے اہلخانہ سے غیرمشروط معافی مانگتا ہوں۔ تمام کرکٹرز پر واضح کرنا چاہتا ہوں کہ پی سی بی کوڈ آف کنڈکٹ کی خلاف ورزی پر انہیں وقتی فائدہ تو مل سکتا ہے، مگر اس کے نتائج پورے کیریئر پر اثر انداز ہوتے ہیں۔

پی سی بی کا کہنا ہے کہ قومی کرکٹ دھارے میں شامل ہونے کے لیے شرجیل کو ری ہیب پروگرام مکمل کرنا ہوگا۔

ڈائریکٹر پی سی بی سیکیورٹی اینڈ اینٹی کرپشن لیفٹیننٹ کرنل ریٹائرڈ آصف محمود کا کہنا ہے کہ شرجیل خان نے آج ملاقات میں اپنے کیے پر شرمندگی اور ندامت کا اظہار کیاہے۔ پی سی بی کرپشن پر کوئی سمجھوتہ نہیں کرے گا۔

پیر کو شرجیل خان نے اپنے وکیل کے ساتھ پی سی بی حکام سے ملاقات کی۔ ملاقات میں شرجیل خان کی کرکٹ میں واپسی کا روڈ میپ ترتیب دیا گیا۔

پی سی بی اعلامیے کے مطابق ری ہیب پروگرام کے مطابق شرجیل خان کو اینٹی کرپشن کوڈ پر لیکچر لینا اور دینا ہوگا۔ شرجیل خان کو سوشل سروس کے طور پر یتیم خانے کا دورہ کرنا ہوگا۔ پاکستان کرکٹ ٹیم کے کھلاڑیوں اور اسپورٹنگ اسٹاف کے ساتھ ایک نشست رکھنی ہوگی جس میں وہ ندامت کا اظہار کریں گے۔

شرجیل خان پر پی ایس ایل 2 میں اسپاٹ فکسنگ پر پابندی لگادی گئی تھی۔ شرجیل خان کی سزا 10 اگست کو ختم ہوئی جس کے بعد اب وہ ایک بار پھر قومی ٹیم کی نمائندگی کے خواہش مند ہیں۔ تاہم اس کے لیے انہیں ری ہیب پروگرام مکمل کرنا ضروری یے ۔ طریقہ کار کے مطابق انہیں اپنی غلطی کا اعتراف کرنے کے ساتھ سب سے معافی مانگنا پڑے گی۔مخلتف لیکچرز کا حصہ بھی بننا ہوگا۔

شرجیل خان نے کہا کہ فوری طور پر کلب کرکٹ کھیل کر فٹنس حاصل کروں گا۔ چوں کہ 30 ماہ سے کرکٹ نہیں کھیلی اس لیے فوری طور پر فرسٹ کلاس کرکٹ نہیں کھیلوں گا۔

کرکٹر شرجیل خان کے وکیل شیغان اعجاز نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پی سی بی سیکیورٹی ویجی لینس ڈپارٹمنٹ سے ملاقات ہوئی، شرجیل پی سی بی کے ری ہیب پروگرام پر عمل کریں گے۔ ری ہیب پروگرام آج سے شروع ہوگیا ہے، اس کے  ساتھ کرکٹ بھی جاری رہے گی اور پی سی بی کے پروگرام کی تمام شرائط پوری کریں گے۔

کھیلوں کی خبریں سے مزید