• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

زیادتی کا شکار خاتون سے چھینی گئی انگوٹھی، گھڑی مل گئی




موٹر وے پر خاتون سے زیادتی کیس کی تحقیقات جاری ہیں، تفتیشی اہلکاروں کو واقعے کی جگہ سے زیادتی کا شکار ہونے والی خاتون سے چھینی گئی انگوٹھی اور گھڑی مل گئی۔

تفتیشی اہلکاروں کی جانب سے دونوں اشیاء کو برآمد کرنے کے بعد فنگر پرنٹ کے تجزیئے کے لیے بھجوا دیا گیا ہے۔

آئی جی پنجاب انعام غنی کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ 15 مشتبہ افرادکی پروفائلنگ کر لی ہے۔

انہوں نے بتایا کہ 3 مختلف مقامات سے جیو فینسنگ کے لیے موبائل کمپنیز کے ڈیٹا کا تجزیہ ہو رہا ہے۔

آئی جی پنجاب نے یہ بھی بتایا ہے کہ لوکل کیمروں سے ویڈیو ریکارڈنگ لے کر مشتبہ افراد کی شناخت کو آگے بڑھایا جا رہا ہے۔

دوسری جانب پنجاب پولیس نے لاہور سیالکوٹ موٹر وے کا سیکیورٹی کنٹرول سنبھال لیا ہے۔

یہ بھی پڑھیئے:۔

خاتون سے زیادتی، کھوجیوں کی نشاندہی پر 7 افراد زیرِ حراست

زیادتی کے دوران خاتون پر ڈنڈوں سے تشدد کیا گیا، پولیس

خاتون سے زیادتی کرنیوالے ملزمان کے گاؤں تک پہنچ گئے: آئی جی پنجاب

آئی جی پنجاب انعام غنی نے ایس پی یو اور پی ایچ پی کی مشترکہ ٹیموں کو لاہور تا سیالکوٹ موٹر وے پر گشت کرنے کا حکم دے دیا ہے۔

واضح رہے کہ سابق آئی جی پنجاب شعیب دستگیر نے 28 جولائی کو موٹر وے پولیس کی تعیناتی کے لیے سیکریٹری مواصلات کو خط لکھا تھا۔

خط میں مرید کے اور ساہو والا میں موٹر وے پولیس کو ملازمین کے سب دفتر بنانے کا کہا گیا تھا۔

قومی خبریں سے مزید