• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

جوبائیڈن کو ’ہلال پاکستان‘ کب اور کیوں ملا؟

امریکا کے نومنتخب صدر جوبائیڈن دو بار پاکستان کا دورہ کرچکے ہیں۔ انہوں نے2008 اور2011 میں پاکستان کا دورہ کیا۔

سال2008  میں جوبائیڈن نے پاکستان کیلئے اربوں ڈالر کی امداد کا پیکج تیار کیا تھا، اسی سال انہیں پاکستان کی مسلسل حمایت پر ہلال پاکستان کے ایوارڈ سے نوازا گیا۔

انہوں نے پاکستان کیلئے ایک اعشاریہ 5 بلین ڈالر غیر فوجی امداد کی حمایت کی تھی۔

یاد رہے کہ احترام اور عزت کے لیے دیے جانے والے اعزازات میں سے ہلال پاکستان، نشانِ پاکستان کے بعد دوسرا بڑا اعزاز ہے۔

نومنتخب امریکی صدر 2008 کے بعد 2011 میں پاکستان آئے اور اس وقت کے صدر آصف زرداری اور وزیراعظم  یوسف رضا گیلانی سے ملاقاتیں کی تھیں۔

جو بائیڈن یہ اعزاز حاصل کرنے والے تیسرے امریکی تھے۔ اس سے قبل 1983 میں لیفٹیننٹ کرنلرونالڈ سپیئرز کو جنرل ضیاء الحق کی جانب سے یہ اعزاز دیا گیا تھا۔


2006 میں امریکی سفیر ریان کروکر کو پاکستان میں خوفناک زلزلے کے بعد پاکستان کی مدد کرنے کے صلے میں صدر پرویز مشرف کی جانب سے ’ہلال پاکستان‘ سے نوازا گیا تھا۔

واضح رہے کہ ڈیموکریٹ امیدوار جو بائیڈن امریکا کے 46ویں صدر منتخب ہوگئے ہیں، ریاست پنسلوانیا میں ووٹوں کی گنتی مکمل ہونے کے بعد جو بائیڈن کے الیکٹورل ووٹوں کی تعداد 273 جبکہ اُن کے حریف ری پبلکن امیدوار ڈونلڈ ٹرمپ کے الیکٹورل ووٹوں کی تعداد 214 ہے۔

بین الاقوامی خبریں سے مزید