آپ آف لائن ہیں
پیر6؍رمضان المبارک 1442ھ 19؍اپریل2021ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

عبدالحفیظ شیخ نے ڈالر سستا رکھنےکی پالیسی کو ملکی معیشت کیلئے بُرا قرار دیدیا

وزیر خزانہ ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ نے ماضی میں جان بوجھ کر ڈالر سستا رکھنے کی پالیسی کو ملکی معیشت کے لیے بُرا قرار دیدیا ہے۔

سینیٹ اجلاس کے دوران اظہار خیال کرتے ہوئے عبدالحفیظ شیخ نے کہا کہ پاکستانی ہر کسی کو جانتے ہیں، اُن پر ہر کسی کا ماضی اور حال واضح ہے۔

انہوں نے کہا کہ حال کو سمجھنےکے لیے ہمیں ماضی میں جانا ہوتا ہے، پی ٹی آئی کی حکومت آئی تو ملک کو زبردست اقتصادی بحران کا سامنا تھا۔

وزیر خزانہ نے کہا کہ ملک کی بیرونی تجارت میں بحران تھا، پتا نہیں کیوں سابقہ حکومت نے خصوصی پالیسی اپنائی۔


اُن کا کہنا تھا کہ ماضی کی حکومت میں جان بوجھ کر ڈالر سستا رکھنے کی پالیسی رکھی گئی، جس کے ملکی معیشت پر برے اثرات مرتب ہوئے۔

عبدالحفیظ شیخ نے مزید کہا کہ ڈالر سستا رکھنے کے لیے اپنے ڈالرز جھونکنے پڑتے ہیں، جس سے باہر کی چیزیں سستی ہوجاتی ہے اور لوگ انہیں خریدنا چاہتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ڈالر کو سستا رکھنے سے مقامی طور تیار اشیاء کی کھپت رک جاتی ہے، ہماری اپنی اشیاء کی طلب میں کمی آجاتی ہے۔

وزیر خزانہ نے یہ بھی کہا کہ جب پی ٹی آئی کی حکومت آئی تو غیر ملکی زرمبادلہ کے ذخائر 2 ارب ڈالر سے بھی کم تھے۔

اُن کا کہنا تھا کہ امپورٹ اور ایکسپورٹ کے درمیان فرق 32 ارب ڈالر کا ہوگیا تھا، ایکسپورٹ بڑھنے کی رفتار صفر سے کم ہو گئی تھی۔

تجارتی خبریں سے مزید