• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

امریکا میں نائن الیون کا واقعہ سپر پاور کی انٹیلی جنس کی ناکامی تھا،رحمٰن ملک

اسلام آباد( نمائندہ خصوصی ) پیپلزپارٹی کے رہنماءرحمٰن ملک نے کہا ہے کہ امریکا میں نائن الیون کا واقعہ سپر پاور کی انٹیلیجنس کی ناکامی تھا، القاعدہ کا سربراہ اسامہ بن لادن ایبٹ آباد میں ہی تھا اور وہیں اس کو مارا گیا تھا، قسم کھاتا ہوں ہمیں اسامہ کی موجودگی کا علم نہیں تھا،ایبٹ آباد کمیشن رپورٹ میں بھی یہی تھا کہ ہماری اینٹلی جنسی کی ناکامی تھی، نجی ٹی وی کے مطابق رحمٰن ملک نے ایک انٹرویو کے دوران کہا کہ اسامہ اپنی دوسری بیوی کی وجہ سے پکڑا اور مارا گیا،اسکو اپنی یمنی بیوی سے بہت پیار تھا،یمنی بیوی کے خاندان کو امریکیوں نے ساتھ رکھا ہوا تھا اور پیغامات آتے جاتے تھے،انہوں نے کہا کہ اسامہ بن لادن کے کے پیچھے تھے ، دو تین جگہوں پر اطلاع ملنے پر چیک بھی کیا لیکن وہ کوئی اور نکلا،انہوں نے انکشاف کیا کہ اسامہ کی بیوی سے اسکے بھائی اوربچوں کی موجودگی کی خود پوچھ گچھ کی تھی، یمنی بیوی کے بھائی نے اسامہ سے ملاقات کیلئے اس مقام پر آنے سے انکار کیا تھا لیکن وہ یہاں اسامہ کے پاس ضرور آتا جاتا تھا،اسامہ کی دوسری بیوی یمن سے ایران آئی جہاں پر امریکیوں نے اسکو ٹریس کیا ور پھر وہ افغانستان پہنچ گئی، افغانستان سے دو تین لوگ اسے یہاں لیکر آئے جو بک گئے یا سٹنگ آپریشن میں تھے، ایک ملائیشین لڑکے سے سم ملی تھی جس سے اس نے ادھر ادھر مشکوک کالز کی تھیں،وہ لڑکا اسامہ کے مارے جانے سے قبل پکڑا گیا تھا لیکن وہ بولا نہیں تھا،رحمٰن ملک نے کہا یہ سوال ضرور ہے کہ اسامہ کو زندہ کیوں نہیں پکڑا گیا،اس حوالے سے کس کس نے مال کھایا۔
اسلام آباد سے مزید