• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

عالمی طبیعاتی کانفرنس، سائنس وٹیکنالوجی کے میدان میں بہتری کا احاطہ کرے گی، پروفیسر ڈاکٹر سروش حشمت لودھی

وائس چانسلر این ای ڈی یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر سروش حشمت لودھی نے کہا ہے کہ الیکٹرونکس، میٹریل، آپٹکس، میکینیکل، سول سب ہی پر فزکس کا اطلاق ہوتا ہے۔

پروفیسر ڈاکٹر سروش حشمت لودھی نے جامعہ این ای ڈی کے مرکزی آڈیٹوریم میں پہلی بین الاقوامی اپلائیڈ فزکس اینڈ انجینئرنگ کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ یہ کہنا مناسب ہوگا کہ فزکس کا اطلاق قریباً پورے معاشرے پر ہے اور پورا انجینئرنگ سیکٹر فزکس پر انحصار کرتا نظر آتا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ اطلاقی طبیعات کی عالمی کانفرنس، سائنس و ٹیکنالوجی کے میدان میں بہتری کا احاطہ کرے گی۔

وائس چانسلر سرسید یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر ولی الدین، چیئرمین پاکستان ریگولیٹری اتھارٹی(پی این آر اے) فیضان منصورنے بطور مہمان خصوصی جبکہ ڈائریکٹر جنرل آف نیشنل سینٹر فار فزکس ڈاکٹر حفیظ حورانی نے بطور اعزازی مہمان پہلی بین الاقوامی اپلائیڈ فزکس اینڈ انجینئرنگ کانفرنس کے استقبالیہ سے خطاب کیا۔

شیخ الجامعہ سر سید یونیورسٹی ڈاکٹر ولی الدین نے کانفرنس آرگنائزرز کی کاوشوں اور مثالی نظم وضبط کو سراہتے ہوئے کہا کہ عالمی کانفرنس کے انعقاد کے توسط سے انجینئرنگ سیکٹر کو ایسا پلیٹ فارم میسر ہوگا جو کہ علمی اور تدریسی معاملات کی ترقی کا ضامن ہوگا۔

استقبالیہ سے خطاب کرتے ہوئے ڈین فیکلٹی آف انفارمیشن سائنسز اینڈ ہیومنیٹس پروفیسر ڈاکٹر نعمان احمد کا کہنا تھا کہ فزکس کے حوالے پچھلے کافی عرصے سے کوئی قابل قدر کانفرنس نہیں ہوئی ہے لہٰذا یہ کانفرنس فزکس کے طالب علموں کے لیے ذہنی بالیدگی میں اضافہ ثابت ہوگی۔

ڈائریکٹر جنرل آف نیشنل سینٹر فار فزکس ڈاکٹر حفیظ حورانی کا کہنا تھا کہ ہم این ای ڈی کے تحقیق کار انجینئرز کو دعوت دیتے ہیں کہ ہمارے ادارے میں آکر ریسرچ کریں۔ فزکس سے تعلق رکھنے والوں کے لیے اس سطح کی کانفرنس یقیناً تحقیق میں بہتری کے راستے کھولے گی۔

چیئرمین پاکستان نیوکلیئر ریگولیٹری اتھارٹی فیضان منصور کا کہنا تھا کہ این ای ڈی کی صد سالہ تقریبات میں اس عالمی کانفرنس کا انعقاد قابل تعریف ہے۔

انہوں نے کہا کہ جن علمی نشستوں سے معاشرتی بہتری ممکن ہو ان کا متواتر ہونا ضروری ہے۔

کانفرنس کی اہمیت اُجاگر کرتے ہوئے چیئرمین شعبہ طبیعات ڈاکٹر عرفان احمد کا کہنا تھا کہ ٹیکنالوجی کے تقاضوں کو جلد پورا کرنے کے لیے تربیتی نشستوں کی اشد ضرورت ہے، یہ کانفرنس پہلی ہے لیکن اس تسلسل کو جاری رکھنے کا ارادہ رکھتے ہیں۔

جامعہ این ای ڈی کے ترجمان کے مطابق اس بین الاقوامی کانفرنس میں 7 ممالک سمیت چاروں صوبوں سے ماہرین نے آن لائن شرکت کی۔ ان دو روز میں قریباً بیالیس ریسرچ پیپرز پڑھے جائیں گے۔ کانفرنس کے اختتامی سیشن سے پرو وائس چانسلر این ای ڈی پروفیسر ڈاکٹر محمد طفیل، ڈائریکڑ جنرل پاکستان سائنٹفک اینڈ ٹیکنالوجیکل انفارمیشن سینٹر ڈاکٹر محمد اکرم اور ڈائریکٹر پاکستان نیوکلیئر ریگولیٹر اتھارٹی آر این ایس ڈی تھری حافظ محمد زبیر خطاب کریں گے۔

قومی خبریں سے مزید