Najam Ul Hassan Atta - Urdu Columns Pakistan | Jang Columns
| |
Home Page
منگل 03 صفر المظفر 1439ھ 24 اکتوبر 2017ء
نجم الحسن عطاء
August 28, 2015
بجلی کے نرخوں میں 30فیصداضافہ

آئی ایم ایف کی ہدایت پر’’کے الیکٹرک‘‘ کی انتظامیہ کو اجازت دی گئی ہے کہ وہ بجلی کے نرخوںمیں 19سے30فیصد اضافہ کرے اور اس پر عملدرآمد کا اعلان 14 جولائی سے ہوچکا ہے۔اس تناظر میں سیاسی پارٹیاں خاموش ہیں لیکن کراچی چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر افتخار ویرہ نے کے الیکٹرک کو گھریلو صارفین کیلئے بجلی کے نرخوںمیں اجازت دینے پر...
September 19, 2013
نج کاری :قومی اثاثوں کی عالمی سرمائے میں منتقلی

عصر حاضر میں نج کاری ”امپیریل کنٹرول“ کے تحت کی جاتی ہے۔ اسے یوں بھی دیکھا جائے کہ بین الاقوامی بینک اور اسٹاک مارکیٹیں اس عمل سے فائدے حاصل کرتی ہیں جن کا حتمی مقصد یہ ہوتا ہے کہ آلودگی اور بڑھتی ہوئی آبادی کے کرپشن زدہ بے ہنگم انتظامی شہروں میں ہر قسم کی کرنسی کی یلغار سے ”کسبینو“ معیشت کو تقویت دی جائے۔ اس سے عالمی سرمائے کی...
August 31, 2013
مسرتوں کے اسباب کی منصفانہ تقسیم

ہر مذہب، فرقے اور قومیت کے اہل بست وکشاد اپنی مخصوص افادیت کے تحت نظام تعلیم تشکیل دیتے ہیں اور تعلیم میں بین السطور پروپیگنڈہ اپنے اپنے مفادات کے مطابق کرتے ہیں، عوام الناس نہیں بلکہ استحصال کرنے والے طبقات اس سے فائدہ اٹھاتے ہیں۔ اقتصادی بے انصافی روز بروز بڑھتی جارہی ہے دوسری طرف سرمایہ دارانہ مقابلے اور پروپیگنڈہ سے سماجی...
August 09, 2013
ذائقہ ان کا ، ذوق بھی ان کا آنکھیں میری باقی ان کا

20ویں صدی کے اوائل میں بعض مغربی دانشوروں نے سرمایہ داری اور فاشزم کوایک دوسرے کے مماثل کہا جس کی بڑی علامتیں ہٹلر اور مسولینی کی شکل میں ابھریں اور معدوم ہوگئیں۔ یہ بھی کہا گیا تھا کہ فاشزم نے دستانے اتار رکھے ہیں اس لئے ہر کوئی بآسانی اپنا لہو تلاش کرسکتا تھا لیکن سرمایہ داری نے جودستانے پہنے ہوئے ہیں اس کے لہو کی تلاش کے لئے...
July 19, 2013
ہوگو شاویز سے ”پیٹ میں راکھ تک“

طارق علی خان بائیں بازو کے معروف دانشور ہیں جن کی زندگی لندن میں گزری، وطن کی یاد ستائے تو آجاتے ہیں اور اپنے خیالات کا اظہار کر کے چلے جاتے ہیں۔ کبھی کبھی محسوس ہوتا ہے ایک توانا اور زیرک دانشور کی زندگی بھر کی کاوشیں ان کی ذات کے حصار سے آگے نہ بڑھیں غالباً انہوں نے اس دیہاتی بچے کو نہیں دیکھا ہو گا جو گاؤں کے جوہڑ میں بھینس کی دم...
July 01, 2013
پراپرٹی ٹیکس اور ہمزاد کا دکھ

یہ بات کتنی درست ہے کہ خیال اور ادراک کی درمیانی مسافت طے کرنا اصل اظہار ہے۔ اچھے لوگ کہتے ہیں کہ اگر آسانیاں ہوں تو زندگی دشوار ہو جاتی ہے لیکن آسانیاں ان کے لئے ہیں جو عالمی اور مقامی سرمایہ دار ہیں۔ عام آدمی کی دنیا بھر میں زندگی جہنم زار بن گئی اور اس سلسلے میں پاکستان کے عوام سرفہرست ہیں لہٰذا خیال اور ادراک کا درمیانی فاصلہ طے...
June 28, 2013
تجھ سے بھی دلفریب ہیں غم روزگار کے

پاکستان کی تاریخ میں جتنے بجٹ بنے اس کی بنیاد ان اعداد و شمار پر رہی جو کہ بالکل جعلی ہیں۔ ایف بی آر کو اچھی طرح علم ہے کہ اس کے محکموں کی ملی بھگت، آئی ایم ایف کی شرائط، کرپشن اور بیڈ گورنینس نے بجٹ کے خسارے میں اضافہ جاری رکھا۔ قرضوں پر انحصار کر کے بجٹ بنائے جاتے ہیں بلکہ قرضے ادا کرنے کیلئے مزید قرض لئے جاتے ہیں۔ پاکستان پر...
June 01, 2013
روپے کے مقابلے میں ڈالر کو ”کیپ“ کرنا ہوگا

منتخب حکومت حلف اٹھانے کے ایک ہفتے کے اندر 8فیصد خسارے کے ساتھ بجٹ پیش کرے گی اور عوام امید لگائے بیٹھے ہیں کہ میاں محمد نواز شریف کی حکومت بجلی کے بحران کو اس قدر حل کر دے گی کہ سبھی کو کچھ دیر کے لئے سکون کی نیند میسر آجائے اورصبح اٹھیں تو روز گار شکم کے لئے اسی بجلی کے ذریعے رزق کا سامان کر سکیں۔ ابھی انہیں بلٹ ٹرین چاہیے نہ کوئی...
May 24, 2013
بائیں بازو کی قربانیاں اور عمران خان کے نوجوان

پاکستان کی تاریخ اس بات کی گواہ ہے کہ یہاں جمہوری کلچر کے ارتقائی عمل کو دانستہ طاغوتی طاقتوں نے روکے رکھا۔ عصر حاضر میں اس کی ایک بڑی وجہ یہ رہی کہ رائے عامہ عملی ثمر سے بے بہرہ رکھی گئی اور عوام کو یہ علم نہیں کہ عالمی تناظرمیں انہوں نے کس طرف جانا ہے۔ پاکستان کے معرض وجود میں آتے ہی جن طبقات کو حق حکمرانی برطانوی سامراج نے سونپا...
May 06, 2013
دلا بھٹی، چی گویر ا، بھگت سنگھ فریڈم فائیٹر یا مارگریٹ تھیچر

”دی اکانومسٹ“ اپریل 2013ء کے دوسرے شمارے کا سر ورق مارگریٹ تھیچر کا تھا۔ اداریہ بھی ان کے انتقال پر ان کے عنوان سے تھا۔ اس میں چونکا دینے والی بات یہ تھی کہ سابق وزیراعظم برطانیہ کو فریڈم فائیٹر کہا گیا جس نے دنیا کی ایک ہزار ملٹی نیشنل کمپنیوں اور مٹھی بھر عالمی اجارہ داروں کی ایسی آزادی کی بات کی ہے جس کے نتیجے میں آج دنیا معاشی...
April 20, 2013
امریکہ ایشیاء میں تیسری عالمی جنگ چاہتا ہے!!

اہم ترین سوال یہ ہے کہ کیا افغانستان سے امریکی انخلاء کے بعد 3,52,000 افغانی فوجی اور پولیس ملک کا نظم و نسق سنبھال سکے گی اور کیا امن قائم ہوگا یا اس خطے کو نیٹو افواج آتش فشاں بناکر چھوڑ جائیں گی؟ جس کی سب سے زیادہ حدت پاکستان میں مزید بربادی کی صورت میں محسوس کی جائے گی۔ حقیقت یہ ہے کہ امریکہ اور اس کے اتحادی فوجی افغانستان کی جنگ سے...
April 12, 2013
اختلاف رائے پر لوگ سر کیوں مانگتے ہیں؟

امریکہ نے 1950ء کے بعد یہ حکمت عملی اپنائی کہ سرد جنگ کے دوران کوئی مقروض ملک کا رہنما اشتراکیت کے لئے نرم گوشہ رکھے، اسے دنیا سے رخصت کر دیا جائے۔ فیڈل کاسٹرو نے کیوبا میں جس قسم کے حالات دیکھے، جاننے والے خوب جانتے ہیں لیکن چی گیورا کے ساتھ جو ہوا تاریخ کے اوراق اس کے گواہ ہیں۔ وہ جان کی بازی لگا کر دنیا کو تبدیل کرنے کے لئے افریقہ...
March 23, 2013
قرار داد پاکستان اکبر اعظم کے دور میں کیوں پیش نہ ہوئی؟

23 مارچ 1940ء میں قرار داد پاکستان پیش کی گئی۔ قوم پرستوں کی جانب سے تنقید کی جارہی تھی کہ اس میں ایک ریاست کا نہیں ریاستوں کا ذکر کیا گیا تھا۔ دوسری جانب اس موٴقف سے انکار کیا گیا تاہم جب 1973ء کا آئین تشکیل دیا گیا اور اس پر پاکستان کے چاروں صوبوں کے نامی گرامی سیاست دانوں نے دستخط کرکے پاکستان پر ایک ریاست ہونے کا برملا اظہار کردیا تو...
March 16, 2013
کرکٹ میں کھلاڑیوں کی نیلامی اور سٹہ بازی

قدرت اللہ شہاب، شہاب نامے میں رقم طراز ہیں ”ایک زمانے میں کشمیری مسلمانوں کی زندگی کی قانونی حیثیت مبلغ دو روپے تھی۔ اگر کوئی سکھ یا ڈوگرا کسی مسلمان کو جان سے مار ڈالتا تھا تو عدالت قاتل پر سولہ سے بیس روپے تک جرمانہ عائد کر سکتی تھی دو روپے مقتول کے لواحقین کو عطا ہوتے تھے اور باقی رقم خزانہ عامرہ میں داخل ہوتی تھی۔ آپ اندازہ...